.

امریکی وزارت خارجہ نے انتقال اقتدار کا عمل شروع کر دیا ہے: پومپیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نےکہا ہے کہ امریکی وزارت خارجہ نے اقتدار اور اختیارات کی منتقلی کا عمل شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنرل سروسز ڈیپارٹمنٹ نے ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار جو بائیڈن کو باضابطہ طور پر اقتدار سونپنا شروع کرنا شروع کر دیا ہے۔

پومپیو نے "فاکس نیوز" کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کہاکہ آج ہم نے اقتدار کی منتقلی کا عمل شروع کیا ہے اور اس حوالے سے قانونی تقاضے پورے کیے جا رہے ہیں۔

امریکی انتظامیہ کے ایک عہدیدار نے اعلان کیا کہ وائٹ ہاؤس نے جیتنے والے امریکی صدر جوبائیڈن روزانہ خفیہ انٹیلی جنس رپورٹس سے آگاہ کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

فیصلے کا مطلب یہ ہے کہ بائیڈن کو قومی سلامتی کے بڑے خطرات سے متعلق انٹیلی جنس خدمات کی تازہ ترین معلومات تک رسائی حاصل ہو گی۔

اس عہدیدار کا یہ بیان منگل کے روز پینٹاگان کے اعلان کے بعد سامنے آیا جس اس نے منتقلی کے عمل کو آسان بنانے کے لیے بائیڈن کی ٹیم کے ساتھ پہلی ملاقات کی ہے۔

وزارت خارجہ نے بائیڈن کی ٹیم کے ساتھ ہم آہنگی شروع کرنے کا بھی اعلان کیا اور اسے وزارت دفاع کی سرگرمیوں اور منصوبوں سے متعلق انٹیلی جنس بریفنگ اور معلومات فراہم کیں۔

ہفتوں کی مزاحمت کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے انتخابی نتائج کو چیلنج کرنے کی کوششوں کو جاری رکھنے کےعزم کے باوجود اپنے حریف جو بائیڈن کو اقتدار کی منتقلی کے سلسلے میں آگے بڑھنے کی اجازت دے دی ہے۔

پیر کے روز جنرل سروسز ایڈمنسٹریشن ، وفاقی ایجنسی جو صدارتی منتقلی کی منظوری دیتی ہے نے جوبائیڈن کو بتایا کہ وہ باضابطہ طور پر اقتدار ہاتھ میں لینےکا عمل شروع کر سکتے ہیں۔