عرب اتحاد نے حوثیوں کی بارودی کشتی تباہ کردی،تجارتی بحری جہاز کو معمولی نقصان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے بحیرہ احمر کے جنوب میں میں بارود سے لدی ایک کشتی کو کامیابی سے تباہ کردیا ہے۔بدھ کی صبح ایران کے حمایت یافتہ یمنی حوثیوں نے یہ کشتی ایک تجارتی بحری جہاز پر حملے کے لیے بھیجی تھی۔

عرب اتحاد کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ دہشت گرد حوثیوں کی اس کوشش کے نتیجے میں تجارتی بحری جہاز کو معمولی نقصان پہنچا ہے۔

عرب اتحاد نے کہا ہے کہ ایران کی معاونت سے حوثی ملیشیا کی دہشت گردی کی اس طرح کی کارروائیوں سے عالمی تجارت اور جہازرانی کے لیے خطرات پیدا ہوچکے ہیں۔

قبل ازیں برطانیہ کی میری ٹائم سکیورٹی کمپنی ایمری نے یہ اطلاع دی تھی کہ یونان کے زیرانتظام ایک ٹینکر کو سعودی عرب کے ٹرمینل پرآبی بارودی سرنگ کے دھماکے میں نقصان پہنچا ہے۔

سعودی عرب کے جنوب مغرب میں واقع علاقے الشقیق کے نزدیک بحیرہ احمر میں مالٹا کے پرچم بردار اور یونان کے زیر انتظام تیل بردار ٹینکر ایم ٹی اگراری کو علی الصباح بارودی سرنگ کے اس حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

یونان کی منتظم کمپنی نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ’’ ان کے جہاز کو ایک نامعلوم ذریعے سے نشانہ بنایا گیا تھا۔اگراری پانی کی سطح سے ایک میٹر بلندی پر آبی سرنگ کا نشانہ بنا تھا اور اس کے دھماکے سے اس کے زیر حصے میں سوراخ ہوگیا ہے۔‘‘ اس نے اس امر کی تصدیق کی ہے کہ اس حملے میں جہاز کاعملہ محفوظ رہا ہے اوراس پر سوار کوئی شخص زخمی نہیں ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں