.

اسرائیلی شہریوں کو یو اے ای میں آمد پر سیاحتی ویزوں کے اجرا کا آغاز

استثنائی سمجھوتے کے نافذالعمل ہونے سے قبل عبوری انتظام، مابعد اماراتی اور اسرائیلی بغیر ویزا سفر کرسکیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے اسرائیلی شہریوں کو سیاحتی ویزوں کے اجرا کا آغاز کردیا ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق ابوظبی میں وزارت خارجہ نے عبوری انتظام کے تحت اسرائیلی پاسپورٹ کے حاملین کو داخلے پر سیاحتی ویزوں کے اجرا کا اعلان کیا ہے۔

یو اے ای نے اسرائیل کے ساتھ دو طرفہ سمجھوتے کے تحت بغیر ویزا سفر پرعمل درآمد سے قبل یہ اقدام کیا ہے۔اس کے تحت اسرائیلی یو اےای میں آمد پر ویزے حاصل کرنے کے اہل ہوں گے جبکہ اسرائیل جانے والے اماراتیوں پر بھی یہی اصول لاگو ہوگا۔

وام نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ یو اے ای کے اس اقدام کا مقصد معاہدۂ ابراہیم کے تحت ریاست اسرائیل کے ساتھ دوطرفہ تعاون کو فروغ دینا ہے اور فی الوقت یو اے ای کا سفر کرنے والے اسرائیلیوں کو سہولت مہیا کرنا ہے۔

واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات اور اسرائیل نے 13 اگست کو معمول کے دوطرفہ تعلقات کے قیام کا اعلان کیا تھا اور 15 ستمبر کو وائٹ ہاؤس میں دو طرفہ سفارتی اور تجارتی تعلقات استوار کرنے کے لیے تاریخی امن معاہدے پر دست خط کیے تھے۔

اس کے بعد سے دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کے فروغ کے لیے متعدد سمجھوتے طے پاچکے ہیں۔ان میں براہِ راست پروازوں ،ویزا فری سفر اور سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ کے سمجھوتے شامل ہیں۔