.

امریکی کانگرس میں ترکی پر معاشی پابندیوں کا بل منظور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جمعہ کے روز امریکی کانگرس نے محکمہ دفاع کا بجٹ بل منظور کیا جس میں ترکی کے خلاف روسی 'ایس -400' فضائی دفاعی نظام کی خریداری پر پابندیوں کی منظوری کی ایک شق بھی شامل ہے۔

سینیٹ نے دفاعی بجٹ ایکٹ کی منظوری دی جس میں روس اور ترکی کے خلاف پابندیاں بھی شامل ہیں۔

جمعہ کے روز سینیٹ کے دوتہائی سے زیادہ ارکان نے 740 بلین ڈالر کے بجٹ کے حق میں ووٹ دیا جس پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مخالفت کی تھی اور اس کو ویٹو دینے کی دھمکی دی تھی۔

امریکی ایوان نمائندگان نے گذشتہ منگل کو اس بل کی منظوری دی تھی جس میں صدارتی ویٹو کو بھی ناکام بنانے لیے کافی ووٹ ملے تھے۔

چار ذرائع نے جمعرات کے روز اس معاملے سے واقف دو امریکی عہدیداروں سمیت تصدیق کی کہ امریکا گذشتہ سال روسی ایس -400 فضائی دفاعی نظام کی خریداری پر ترکی پر پابندیاں عائد کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ موجودہ صدر نے ترکی کی ناراضی سے بچنے کے لیے انقرہ پرپابندیوں سے گریز کیا تاہم نو منتخب صدر جو بائیڈن کی زیر قیادت آئندہ امریکی انتظامیہ ترکی کے معاملے میں زیادہ سختی کا مظاہرہ کرے گی۔اس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ پابندیوں سے ترکی کی دفاعی صنعت، انتظامیہ اور اس کے سربراہ اسماعیل دمیر کو نشانہ بنایا جائے گا۔

دوسری جانب ایک سینیر ترک عہدیدار نے کہا کہ 'روسی ایس -400' میزائل دفاعی نظام کی خریداری پر ترکی پر امریکی پابندیوں سے دونوں ممالک کے مابین تعلقات کو نقصان پہنچے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا اور ترکی نیٹو کے رکن ہیں اور ایک رکن ملک دوسرے پر کیسے پابندیاں عاید کر سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پابندیوں کا کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوگا۔ ترکی پر پابندیاں تعمیری سوچ نہیں۔ ان سے دونوں‌ ملکوں کے تعلقات کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔