.

سعودی عدالت سے منی لانڈرنگ کیس میں دو ملزمان کو قید اور جرمانہ کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی ایک فوج داری عدالت نے ایک مقامی کاروباری فرم کے مالک اور اس کے ایک سینیر ملازم کو مجموعی طور پر 9 سال قید اور 28 ملین ریال جرمانہ کی سزا کا حکم دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی پراسیکیوٹر جنرل کو ایک کاروباری فرم کے بنک اکائونٹ کے مبینہ طور پر منی لانڈرنگ میں استعمال کیے جانے کے شبے میں اکائونٹ کی تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ پراسیکیوٹر جنرل کے معاشی امور کے شعبے کو اس کیس کی تحقیقات کا حکم دیا گیا۔

تحقیقات کے دوران یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ کاروباری فرم کے بینک اکائونٹ کو رقوم کی منتقلی کے ضابطہ کار کی خلاف ورزی میں ملوث پایا گیا ہے۔ تحقیقات کے دوران یہ پتا چلا ہے کہ کاروباری فرم کے بنک اکائونٹ کو اندرون اور بیرون ملک رقوم کی منتقلی کے لیے استعمال کیا گیا۔

عدالت نے کمپنی کے مالک اور سینیر ملازم کو 9 سال قید اور 28 ملین ریال جرمانہ کیا گیا ہے۔ جرمانہ کی کل رقم منی لانڈرنگ کے ذریعے بیرون ملک منتقل کی گئی رقم کے مساوی ہے۔