.

ترکی :اسپتال میں آکسیجن کا سلنڈر پھٹنے سے آگ لگ گئی، کووِڈ-19 کے 9 مریض زندہ جل گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں ایک اسپتال میں آکسیجن سلنڈر پھٹ گیا ہے جس کے نتیجے انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیر علاج کووِڈ-19 کے 9 مریض زندہ جل مرے ہیں۔

ترکی کی سرکاری خبررساں ایجنسی اناطولو نے ہفتے کے روز اطلاع دی ہے کہ یہ واقعہ جنوبی شہرغازیان تیپ میں پیش آیا ہے۔اس شہر میں واقع ایک نجی یونیورسٹی سانکو کے زیرانتظام اسپتال میں آکسیجن کا سلنڈر پھٹ گیا تھا۔اس سےانتہائی نگہداشت کے یونٹ میں آگ لگی گئی تھی اور وہاں زیر علاج مارے گئے ہیں۔

ایجنسی نے اسپتال کے ایک بیان کے حوالے سے بتایا ہے کہ آتش زدگی سے مرنے والوں کی عمریں 56 اور 85 سال کے درمیان ہیں۔آگ پر فوری طور پر قابو پا لیا گیا ہے۔

اس نے مزید بتایا ہے کہ انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیر علاج 14 مریضوں کو دوسرے اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے اور واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔

واضح رہے کہ اس وقت ترکی بھرمیں کووِڈ-19 کی وَبا سے متاثرہ افراد کی بڑی تعداد اسپتالوں میں زیرعلاج ہے۔ترکی کے سرکاری اعدادوشمار کے مطابق اس وقت انتہائی نگہداشت کے یونٹوں کے 74 فی صد بستر مریضوں سے پُر ہیں۔تاہم غیر سرکاری تنظیموں کا کہنا ہے کہ انتہائی نگہداشت کے یونٹوں میں مزید مریضوں کے داخل ہونے کی کوئی گنجائش نہیں رہی ہے۔

ترکی کی وزارتِ صحت نے جمعہ کی شب گذشتہ 24 گھنٹے میں کووِڈ-19 کے 26410 نئے کیسوں کی اطلاع دی تھی۔اس طرح مارچ کے بعد ترکی میں کرونا وائرس کے کل کیسوں کی تعداد 19 لاکھ 80 ہزار ہوگئی ہے۔ان اعداد وشمار میں وہ کیس بھی شامل ہیں جن میں کرونا وائرس کی صرف علامات ظاہر ہوئی تھیں۔ترکی نے نومبرکے اختتام تک گذشتہ چار ماہ کے دوران میں ان کیسوں کو رپورٹ نہیں کیا تھا۔

وزارت صحت کے مطابق ترکی میں کووِڈ-19 کا شکار مزید 246 افراد ہلاک ہوگئے ہیں اور یہ ایک دن میں ملک میں اس مہلک وائرس سے سب سے زیادہ ہلاکتیں ہیں۔ترکی میں مارچ میں اس وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد سے 17610 افراد موت کے مُنھ میں جاچکے ہیں۔