.

سعودی وزیرداخلہ ،وزیرثقافت اورچیئرمین انٹرٹینمنٹ اتھارٹی ویکسین لگوانے والوں میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر داخلہ شہزادہ عبدالعزیز بن سعود ، وزیر ثقافت شہزادہ بدر بن فرحان آل سعود اور جنرل انٹرٹینمنٹ اتھارٹی کے چیئرمین ترکی آل الشیخ بھی کووِڈ-19 کی ویکسین لگوانے والوں میں شامل ہوگئے ہیں۔

ترکی آل الشیخ نے اس کے بعد ٹویٹر پر ایک پوسٹ میں کہا ہے کہ’’میں نے فائزر، بائیو این ٹیک کی ویکسین کی پہلی خوراک لگوائی ہے۔اللہ کا شکر ہے کہ ہر چیز بہتر ہے، میں کچھ بھی محسوس نہیں کررہا ہوں۔‘‘

شہزادہ بدر نے بھی ویکسین لگواتے ہوئے اپنی ویڈیو شیئر کی ہے اور ساتھ کیپشن میں لکھا ہے کہ ’’عزت مآب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے سعودی عرب کی کووِڈ-19 کے خلاف جنگ میں قیادت کی ہے۔آج ہم ان کی کاوشوں اور ویژن کے ثمرات سمیٹ رہے ہیں۔‘‘

ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جمعہ کو کرونا وائرس کی ویکسین کی پہلی خوراک لگوائی تھی۔دریں اثناء سعودی وزارت داخلہ نے شہزادہ عبدالعزیز بن سعود کی ایک ویڈیو جاری کی ہے۔اس میں انھیں ویکسین لگائی جارہی ہے۔

سعودی عرب کی وزارتِ صحت نے 15 دسمبر کو اپنی موبائل فون ایپلی کیشن صحتی کے ذریعے ویکسین لگوانے کے خواہاں شہریوں اور مکینوں کی رجسٹریشن کا آغاز کیا تھا۔اب تک پانچ لاکھ سے زیادہ افراد اس ایپ پر اپنے ناموں کا اندراج کروا چکے ہیں۔

وزارت صحت نے امریکا کی دواساز کمپنی فائزر کی جرمن کمپنی بائیو این ٹیک کے اشتراک سے تیار شدہ ویکسین کے محفوظ اور مؤثر ہونے کی تصدیق کی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ اس کی آزمائشی جانچ میں حصہ لینے والے شرکاء میں مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔یہ کرونا وائرس سے دفاع میں مؤثر ثابت ہوئی ہے اور اس کے کوئی ضمنی اثرات بھی مرتب نہیں ہوئے ہیں۔