.

صدرٹرمپ کے حامیوں کے کیپٹول پردھاوے کے بعدکانگریس کی دوخواتین ارکان کووِڈ-19 کا شکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی کانگریس کی دو خواتین ارکان گذشتہ ہفتے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حامیوں کے کیپٹول ہِل پرحملے کے بعد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں۔

ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والی کانگریس کی رکن پرامیلاجیاپال نے ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ انھوں نے کرونا وائرس کا ٹیسٹ کرایا ہے اور اس کا نتیجہ مثبت آیا ہے۔انھوں نے بتایاکہ وہ کیپٹول کی عمارت پر حملے کے بعد ایک محفوظ کمرے میں اپنے دیگر ساتھیوں کے ساتھ چھپ گئی تھیں۔

جیاپال نےکووِڈ-19 کے ٹیسٹ کا مثبت نتیجہ آنے کے بعد کہا ہے کہ ’’بہت سے ری پبلکن ارکان اب بھی کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے حفاظتی احتیاطی تدابیراختیار نہیں کررہے ہیں۔وہ وبا کے دوران میں ایک پُرہجوم کمرے میں عام سا ماسک پہنتے ہیں۔‘‘

ان کا کہنا تھا کہ ’’ہم لوگ کئی گھنٹے تک کمرے میں محصور رہے تھے۔متعدد ری پبلکنزنے نہ صرف بڑی سفاکیت سے ماسک پہننے سے انکار کردیا تھا بلکہ جن ساتھیوں اورعملہ کے ارکان نے انھیں ماسک پہننے کی پیش کش کی تھی،ان کا انھوں ٹھٹھا اڑایا تھا۔‘‘

جیاپال نے اپنا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد کہا ہے کہ ’’جو لوگ ماسک پہننے سے انکار کررہے ہیں، وہ خوداس حماقت کے ذمے دار ہیں اورانھیں ایوان میں ان کی نشستوں پر بیٹھنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔‘‘

ان سے چندے قبل کانگریس کی ایک اورڈیموکریٹ رکن بونی واٹسن کولمین بھی کرونا وائرس کا شکار ہوگئی ہیں۔ انھوں نے یہ یقین ظاہر کیا ہے کہ وہ گذشتہ ہفتے کانگریس کی عمارت پر حملے کے دوران میں وہ اس مہلک وائرس کا شکار کسی فرد یا افراد سے رابطے میں آئی تھیں۔انھیں بھی بلوائیوں کے حملے کے بعد ایک محفوظ کمرے میں محصور ہونا پڑا تھا۔

کانگریس کے ڈاکٹر برائن مناہن نے خبردار کیا تھا کہ ’’گذشتہ بدھ کو ایک الگ تھلگ کمرے میں پناہ لینے کی وجہ سے کرونا وائرس کا شکار ہوسکتے ہیں۔‘‘

ٹرمپ نوازوں کے کیپٹول کی عمارت پرحملے کے چند گھنٹے کے بعدکانگریس کے ایک اور رکن جیک لاٹرنر کا بھی کروناوائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔امریکی صدر کے حامی تب کیپٹول کی عمارت کے نزدیک صدارتی انتخاب کےخلاف احتجاج کے لیے اکٹھے ہوئے تھے۔وہ 3 نومبر کو منعقدہ صدارتی انتخابات میں جو بائیڈن کی جیت کو کالعدم قرار دینے کا مطالبہ کررہے تھے۔

واضح رہے کہ امریکا دنیا میں کروناوائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے اور وہاں اب تک پونے چارلاکھ افراد اس مہلک وائرس کا شکار ہوکر موت کے مُنھ میں جاچکے ہیں۔اس وقت قریباً تین ہزار افراد روزانہ کروناوائرس کی وجہ سے ہلاک ہورہے ہیں۔