.

کرونا ویکسین کے حوالے سے بین الاقوامی عدم یک جہتی پر گوٹیرس کا اظہارِ افسوس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے دنیا بھر میں کوویڈ-19 کی ویکسینیشن کے میدان میں "یک جہتی کی ناکامی" پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

ایک بیان میں ان کا کہنا تھا کہ "ویکسینز سے متعلق امور میں ہمیں آج خلا نظر آ رہا ہے ... کثیر آمدن والے ممالک کو تیزی سے ویکسین پہنچ رہی ہے جب کہ دنیا کے غریب ترین ممالک کے پاس کوئی ویکسین نہیں ہے"۔

گوٹیرس کے مطابق ایک جانب سائنس کامیابیاں حاصل کرتی جا رہی ہے مگر دوسری جانب یک جہتی ویگانگت ناکامی سے دوچار ہونے کے درپے ہیں"۔

گوٹیرس نے نام لیے بغیر کہا کہ "بعض ممالک متوازی معاہدے طے کر کے ضرورت سے زیادہ ویکسینز بھی خرید رہے ہیں"۔

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل نے دو ٹوک انداز میں کہا کہ "ہر ملک کے انفرادی طور پر کام کرنے کی صورت میں ہم کوویڈ-19 پر ہر گز قابو نہیں پا سکیں گے"۔

انہوں نے باور کرایا کہ ویکسین میں طبی عملے اور ان افراد کو ترجیح دینا لازم ہے جن کے متاثر ہونے کا خطرہ زیادہ ہے۔

اسی سلسلے میں عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر ٹیڈروس اڈہینوم گیبروسس نے زور دیا ہے کہ سو روز کے اندر دنیا کے تمام ممالک میں کرونا کی ویکسین مہم شروع کر دیے جانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے یہ بات جنیوا میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کہی۔