.

دبئی : کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں میں اضافہ،اسپتالوں کو آپریشن منسوخ کرنے کاحکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافے کے پیش نظر امارت دبئی کی حکومت نے تمام اسپتالوں کو آیندہ ایک ماہ کے دوران میں غیر ضروری آپریشن منسوخ کرنے کا حکم دیا ہے۔

دبئی کی ہیلتھ اتھارٹی نے تمام سرکاری اور نجی اسپتالوں اور مراکزِ صحت کو ایک سرکلر بھیجا ہے اور اس میں ان سے کہا ہے کہ وہ جمعرات سے صرف ہنگامی طبی کیسوں کی صورت ہی میں میڈیکل آپریشن کریں تاکہ اسپتالوں میں مریضوں کا رش نہ لگے۔

یو اے ای میں گذشتہ نو روز سے کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں کا نیا ریکارڈ بن رہا ہے۔ بدھ اور جمعرات کو ساڑھے تین ہزار سے زیادہ نئے کیسوں کی تشخیص ہوئی ہے لیکن اماراتی حکومت کی جانب سے علاقائی بنیاد پر کرونا وائرس کے نئے کیسوں کے اعداد وشمار جاری نہیں کیے جارہے ہیں جس سے یہ اندازہ ہوسکے کہ کس علاقے میں سب سے زیادہ کیس سامنے آرہے ہیں۔

دبئی نے حالیہ ہفتوں کے دوران میں کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافے کے باوجود سیاحت اور کاروبار کے لیے آنے والوں پر دروازے کھلے رکھے ہوئے ہیں۔تاہم دارالحکومت ابوظبی میں سخت پابندیاں برقرار ہیں اور وہاں آنے والوں کے لیے کووِڈ-19 کے ٹیسٹ کا منفی نتیجہ پیش کرنا لازم ہے۔

دبئی میں نومبر کے بعد کروناوائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔دسمبر کے آخر میں ہزاروں سیّاح نیا سال منانے کے لیے دبئی آئے تھے۔ان کے علاوہ حالیہ ہفتوں میں تعطیلات منانے کے لیے بھی بڑی تعداد میں غیرملکیوں کی شہر میں آمد ہوئی ہے۔دبئی حکومت نے سماجی فاصلے کی شرط اور عوامی مقامات پر ماسک پہننے کی شرط برقرار رکھی ہوئی ہے۔تاہم باقی معمولات زندگی پر کوئی پابندی نہیں ہے۔

دبئی کی سپریم کمیٹی برائے کرائسیس اور ڈیزاسسٹر مینجمنٹ نے نئے سال کے آغاز پر کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے 30 سے زیادہ افراد کے خاندانی یا سماجی اجتماعات منعقد کرنے پر پابندی عاید کی تھی۔اس خلاف ورزی کے مرتکبین کو 50ہزار درہم (13 ہزار ڈالر)جرمانہ اور ایسی کسی تقریب میں شرکت کرنے والے ہر فرد کو 15 ہزار درہم (چار ہزار ڈالر) جرمانہ عاید کرنے کا اعلان کیا تھا۔

کمیٹی نے ضعیف العمر یا دائمی امراض کا شکار افراد کو ہدایت کی تھی کہ وہ نئے سال کے موقع پر منعقد ہونے والے ایسے اجتماعات میں شرکت سے گریز کریں۔نیزاگر کسی شخص کو کھانسی یا بخار ایسی علامات ظاہر ہورہی ہیں،اس کو بھی ایسے اجتماعات میں شرکت سے گریز کرنا چاہیے مگران سخت پابندیوں کے باوجود کرونا وائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ جاری ہے۔