.

چار دہائیاں الباحہ میں انسانیت کی خدمت کرنے والی فلپائنی مسیحا چل بسیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چار دہائیوں تک مسلسل انسانیت کی خدمت کرنے والی فلپائنی نرس کے انتقال پر سعودی عرب کا مغربی شہر الباحہ کی فضا سوگوار ہو گئی- نرس الباحہ کی القری کمشنری کے القواریر قصبے میں سکونت پذیر تھی- گردے فیل ہو جانے پر زندگی کی بازی ہار گئی-

الباحہ میں محکمہ صحت کے ترجمان ماجد الشطی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا القواریر کے باشندے فلپائنی نرس کو ’’ام اسماعیل‘‘ کہہ کر مخاطب کرتے تھے- ہیلتھ سینٹر آنے والے مریضوں کی مدد اورعلاج میں ہمیشہ پیش پیش رہتی تھی- علاقے کے تمام لوگ اس سے مانوس تھے-

ام اسماعیل پر ڈیوٹی کے دوران فالج کا حملہ ہونے پر ہسپتال داخل کروایا گیا جہاں ان کی حالت مزید خراب ہوگئی- گردوں نے کام کرنا چھوڑ دیا تھا- قصبے کے لوگوں نے مدد کے لیے 25 ہزار ریال جمع کرکے پیش کیے-

فلپائنی نرس صحت زیادہ خراب ہو جانے پر وطن چلی گئی تھی اس کی خواہش تھی کہ اپنے رشتہ داروں کے درمیان رہ کر علاج کرائے- تاہم وطن پہنچنے کے بعد اس کی حالت زیادہ خراب ہوئی اور بالآخر زندگی کی بازی ہار گئی- نرس کی موت کی اطلاع پر القواریر کے باشندوں نے غائبانہ نماز جنازہ ادا کی اور شاندار الفاظ میں اسے خراج عقیدت پیش کیا-

مقبول خبریں اہم خبریں