.

حوثیوں کی جیلوں میں تشدد کے سبب 22 یمنی اساتذہ موت کا شکار ہوئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں اساتذہ انجمن کے میڈیا ذمے دار یحیی الیناعی کا کہنا ہے کہ 21 ستمبر 2014ء سے نومبر 2020ء کے دوران حوثیوں کی جیلوں میں تشدد کے سبب جان سے ہاتھ دھونے والے اساتذہ کی تعداد 22 ہو چکی ہے۔

الیناعی کے مطابق حوثی ملیشیا کی جیلوں میں تشدد کے سبب موت کا شکار ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد 137 تک پہنچ چکی ہے۔ اس میں سب سے زیادہ تناسب (16%) اساتذہ کا ہے۔ اس فہرست میں پہلا نام "صالح البشری" بھی ایک استاد کا ہے۔

الیناعی نے مزید بتایا کہ جیلوں میں تشدد کے سبب ہلاک ہونے والے اساتذہ کی تعداد کے لحاظ سے پہلا نمبر الحدیدہ صوبے کا ہے۔ یہاں 4 اساتذہ زندگی کی بازی ہار بیٹھے۔ اس کے بعد حجہ ، صعد اور عمران صوبے ہیں جہاں تین، تین اساتذہ کی زندگیوں کا چراغ گل ہوا۔

مذکورہ یمنی تعلیمی ذمے دار کے مطاب حوثیوں کی جیلوں میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ "دنیا کی سب سے بڑی دہشت گردی" ہے۔