.

مسجد حرام: انتظامی و خدماتی امور کی معاون خواتین ایجنسی کی کاوشیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

رواں سال 17 صفر 1442 ہجری بروز اتوار عمرے کے دوبارہ آغاز کا پہلا مرحلہ شروع ہوا۔ اس کے بعد مسجد حرام میں انتظامی اور خدماتی امور کی معاون خواتین ایجنسی نے تین مرحلوں کے دوران 20 لاکھ خواتین عمرہ زائرین اور خواتین نمازیوں کا استقبال کیا۔

اس مقصد کے لیے 235 خواتین ملازمین کو 20 تربیتی کورسز مکمل کرائے گئے تاکہ انہیں کرونا کی وبا سے مقابلہ کرنے کے واسطے تیار کیا جا سکے۔ ان خواتین نے بھرپور طریقے سے احتیاطی اقدامات اور تدابیر انجام دیں۔ زمینی طور پر آپریشنز کا ایک پیشگی منصوبہ تیار کیا گیا تا کہ حرم مکی میں آنے والی خواتین کو طبی لحاظ سے محفوظ ماحول فراہم کیا جا سکے۔

اس مقصد کے لیے انتظامی اور خدماتی امور کی معاون ایجنسی نے "پلاننگ، کوالٹی اینڈ ٹکنالوجی' امور کی انتظامیہ کے ساتھ تعاون کیا۔ ایجنسی نے مسجد حرام کے 15 دروازوں پر خصوصی پہرے اور تلاشی کا انتظام کیا تا کہ بیت اللہ کی روحانیت میں مخل ہونے والی کسی بھی چیز کو حرم کے اندر آنے سے روکا جا سکے۔

مسجد حرام کے اندر آنے والوں کے جسموں کے درجہ حرارت کی جانچ کے لیے 25 خصوصی مشینیں اور مرکزی داخلی راستوں پر 300 'ہینڈ سینی ٹائزرز' نصب کیے گئے۔ ایجنسی کی 506 کارکنان نے خواتین کے حصوں میں 24 گھنٹے صفائی، تطہیر اور سینی ٹائزیشن کا مسلسل اہتمام کیا تا کہ اللہ کی مہمان خواتین کے لیے محفوظ اور اطمینان بخش ماحول فراہم کیا جا سکے۔ اس دوران خواتین کی نماز کی جگہاؤں اور ملحقہ تنصیبات کو روزانہ 8 بار سینی ٹائز کیا گیا۔ عمرے کے تین مرحلوں میں مجموعی طور پر 15 ہزار سے زیادہ مرتبہ سینی ٹائزیشن کا عمل انجام دیا گیا۔

مزید برآں خواتین کی نماز کی جگہاؤں پر آب زمزم کی بوتلیں فراہم کی گئیں۔