.

یورپی یونین کے باہر سے مسافروں کا فرانس میں داخلہ بند

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی حکومت نے کرونا کی نئی وبا پھیلنے کے بعد یورپی یونین کے باہر سے آنے والے مسافروں کے ملک میں داخلے پر پابندی عاید کر دی ہے۔

فرانسیسی وزیر اعظم ژان کاسٹیکس نے جمعہ کی شام دفاع کونسل کے اجلاس کے بعد اعلان کیا کہ ان کا ملک کرونا کی وجوہات کی بنا پر کچھ عرصے کے لیے یورپی یونین کے باہر سے مسافروں کے داخلے کو روکنے پر مجبور ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ اور جنوبی افریقا میں سامنے آنے والی کرونا کی نئی شکل زیادہ تیزی کے ساتھ پھیل سکتی ہے۔

کیسٹیکس نے کہا کہ صرف ناگزیر وجوہا کی بنا پر کسی کو بیرون ملک یا یورپی یونین کے کسی دوسرے ملک میں سفر کی اجازت ہوگی۔

فرانسیسی وزیراعظم نے خبردار کیا کہ برطانوی اور جنوبی افریقہ میں تبدیل شدہ کرونا کی نئی شکل تیزی کے ساتھ پھیل رہی ہے۔

کاسٹیکس نے اشارہ کیا کہ آنے والے دن کرونا کی وبا کے پھیلنے کے حوالے سے اہم ثابت ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم ملک میں ایک نئے لاک ڈاؤن سے بچنے کے لیے بھرپور کوششیں کر رہے ہیں جبکہ پولیس فورسیں کرفیو کی خلاف ورزی کرنے والوں کے ساتھ سنجیدگی سے نمٹیں گی۔

ادھر فرانسیسی صدر عمانویل میکروں‌ نے کہا ہے کہ وہ پورے ملک میں قرینطینہ نافذ نہیں کریں گے تاہم انہوں نے کرونا لاک ڈائون کی وجہ سے عاید کردہ پابندیوں پر سختی کے ساتھ عمل درآمد پر زور دیا۔