.

قطر:کووِڈ-19 کو پھیلنے سے روکنے کے لیے’’چار درجاتی منصوبہ‘‘ کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے چاردرجاتی منصوبہ کی منظوری دی ہے۔اس کے تحت تعلیمی ، تفریحی اور کاروباری سرگرمیوں پر نئی پابندیاں عاید کردی گئی ہیں۔

قطر کی وزارتِ صحت نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کرونا وائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ ملک میں ممکنہ دوسری لہر کی ابتدائی علامات کا مظہر ہے۔کووِڈ-19 کے تشخیص شدہ کیسوں کی تعداد میں اضافے کے ساتھ اسپتالوں میں بھی رش بڑھ رہا ہے اور وہاں مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔

وزارت صحت نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ قطری مارکیٹیں اب اپنی گنجائش کے مقابلے میں 50 فی صد کام کریں گی۔گھروں میں شادیوں پر پابندی ہوگی اور اب گھروں میں صرف خاندان کے افراد ہی شادیوں میں شرکت کرسکتے ہیں۔نرسریوں میں صرف 30 فی صد تک کام ہونا چاہیے۔

پارکوں یا دوسری کھلی جگہوں پر صرف 15 تک افراد اکٹھے ہوسکتے ہیں۔کسی اندرونی ہال میں پانچ سے زیادہ افراد اکٹھے نہیں ہونے چاہییں۔حکومت نے کرائے پر کشتی دینے پر بھی پابندی عاید کردی ہے اور ذاتی کشتیوں پر صرف 15 افراد کو سوار ہونے کی اجازت ہوگی۔

قطرمیں دوسرے خلیجی ممالک کی طرح حالیہ ہفتوں کے دوران میں کرونا وائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اور جمعرات کو 407 نئے کیسوں کی تشخیص ہوئی ہے جبکہ دسمبر میں ایک سو کے لگ بھگ کیسوں کا اندراج کیا جارہا تھا۔

قبل ازیں کویت نے بدھ کو ملک میں غیرشہریوں کے داخلے پر عارضی طور پر پابندی عاید کردی ہے جبکہ سعودی عرب نے پاکستان سمیت بیس ممالک سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے داخلے پر عارضی پابندی عاید کی ہے۔البتہ سعودی شہری ، طبی کارکنان اور سفارت کار اور ان کے خاندان اس پابندی سے مستثنا ہوں گے۔