.

جرمنی میں سونگھنے والے کتوں کی مدد سے کرونا کے مریضوں کی کامیاب تشخیص

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی میں کرونا کی وبا کا پھیلائو روکنے کے لیے جہاں متعدد اقسام کی کرونا ویکسین تیار کی گئی ہیں وہیں اس وبا کے مریضوں کی نشاندہی اور تشخیص کے لیے کتوں کا بھی استعمال کیا جا رہا ہے۔ سونگھنے کی صلاحیت رکھنے والے یہ کتے انسانی لعاب کو سونگھ کریہ پتا چلاتے کہ یہ مریض وبا کا شکار ہے یا نہیں۔ جرمنی میں کتوں کے ذریعے کیے گئے ٹیسٹوں کے دوران پتا چلا ہے کہ اس طریقہ تشخیص کے 94 فی صد کیسز درست ثابت ہو رہے ہیں۔ جرمنی میں ایک ویٹرنری کلینک نے سنفر کتوں کو کرونا وائرس کی نگرانی کے لیے تربیت دینا شروع کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق جرمن مسلح افواج کے ویٹرنری کتوں کے تربیتی مرکز میں کام کرنے والی ایسٹر شالکے نے وضاحت کی کہ کتے پہلے "کرونا کی بُو" کے عادی کیے جاتے ہیں۔ اس کے بعد انہیں مشتبہ مریضوں کے لعاب سونگھائے جاتے ہیں۔

جبکہ ویٹرنری کلینک کے سربراہ ہولگر فالک نے بتایا کہ اس ٹیم نے ایک مطالعہ کیا جس میں کتوں نے کوویڈ 19 کے متاثرہ لوگوں کےنمونے سونگھے۔ کتوں نے جو نشاندہی کی ان میں 94 فی صد کیسز درست نکلے۔

پچھلے سال ستمبر میں فن لینڈ نے ہوائی اڈے پر معمول کے معائنے کے طریقہ کار کے علاوہ پائلٹ پروجیکٹ کے ایک حصے کے طور پر ہیلسنکی وانٹا ہوائی اڈ ے پر مسافروں سے لیے گئے نمونوں کی چھان بین کے لیے کتوں کی تربیت شروع کی تھی۔

چلی میں سینٹیاگو بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اسکریننگ کی کارروائیوں کے لیے بھی کتوں کا استعمال کیا جاتا ہے۔