.

افغان دارالحکومت کابل میں دوحملوں میں پانچ سرکاری ملازمین ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں دوحملوں میں پانچ سرکاری ملازمین ہلاک ہوگئے ہیں۔

افغان حکام کے مطابق منگل کے روز کابل کے جنوب میں نامعلوم مسلح افراد نے محکمہ صوبائی دیہی ترقی کی ایک گاڑی پرفائرنگ کی ہے جس کے نتیجے میں اس میں سوار چار ملازمین مارے گئے ہیں۔

محکمہ قومی دیہی بحالی کے ترجمان نے بتایا ہے کہ مرنے والوں میں صوبائی محکمہ کے سربراہ بھی شامل ہیں۔وہ وسطی صوبہ میدان وردک کی جانب واپس جا رہے تھے،ان کے محکمہ کا اسی صوبہ سے تعلق ہے۔

کابل کے مشرقی حصے میں افغان وزارت خارجہ کی ایک گاڑی سڑک پر نصب بم سے ٹکرانے کے بعد تباہ ہوگئی۔اس بم دھماکے میں گاڑی کا ڈرائیور ہلاک ہوگیا ہے۔

فوری طور پر کسی جنگجو گروپ نے ان دونوں حملوں کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک ٹیکسٹ پیغام میں کہا ہے کہ ان کی تحریک کا ان حملوں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

تاہم بعض مغربی ممالک کے سفارت خانوں نے حال ہی میں ایک مشترکہ بیان میں دعویٰ کیا ہے کہ طالبان ہی تشدد کے بیشتر واقعات کے ذمے دار ہیں جبکہ طالبان کے حریف سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے کابل اور اس کے نواحی علاقوں میں حالیہ مہینوں میں بیشتر حملوں کی ذمے داری قبول کرنے کے دعوے کیے ہیں۔