یمن سے حوثیوں کا سعودی شہرخمیس مشیط کی جانب داغا گیا بیلسٹک میزائل تباہ :عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

عرب اتحاد نے جمعرات کے روز یمن سے ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کا سعودی عرب کے شہر خمیس مشیط کی جانب داغا گیا ایک بیلسٹک میزائل فضا ہی میں سراغ لگا کر تباہ کردیا ہے۔

عرب اتحاد نے اس ناکام میزائل حملے کے بعد ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’حوثی جان بوجھ کر شہری اہداف کو نشانہ رہے ہیں۔ہم بین الاقوامی قانون کے مطابق دہشت گردی کے ان حملوں کے منصوبہ سازوں اور ذمے داروں کا محاسبہ کریں گے۔‘‘

حوثیوں نے اس میزائل حملے سے ایک روز قبل سعودی عرب کے جنوب مغربی شہر ابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ایک ڈرون سے حملہ کیا تھا جس سے وہان کھڑے ایک سویلین طیارے میں آگ لگ گئی تھی۔تاہم امدادی کارکنان نے کسی بڑے نقصان سے قبل طیارے میں لگی آگ پر قابو پا لیا تھا۔

یمنی حوثیوں نے بعد میں ایک بیان میں ابھاکے ہوائی اڈے پر ڈرون حملے کی ذمے داری قبول کرلی تھی۔سعودی عرب کا کہنا تھا کہ ابھا کے ہوائی اڈے پر حملے کے لیے استعمال کیا گیا ڈرون ایرانی ساختہ ایس یو وی کے مشابہ تھا۔

عرب اتحاد نے گذشتہ روز ایک بیان میں کہا تھاکہ ’’ابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو نشانہ بنانے کی کوشش اور شہری مسافروں کے جان ومال کو خطرے میں ڈالنا ایک جنگی جرم ہے۔‘‘

حوثی ملیشیا پہلے بھی متعدد مرتبہ ابھا کے ہوائی اڈے کو اپنے ڈرون اور میزائل حملوں میں نشانہ بنا چکی ہے۔ابھا شہر یمن کی سرحد سے 120 کلومیٹر دور واقع ہے۔

عرب اتحاد نے گذشتہ روز یمن سے سعودی عرب کی جانب چھوڑے گئے حوثیوں کے دو مسلح ڈرونز کو تباہ کردیا تھا۔ حوثیوں نے اس ہفتے میں سعودی عرب کی جانب ایک مرتبہ پھر ڈرون اور بیلسٹک میزائلوں سے حملے تیزکردیے ہیں۔سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے گذشتہ سوموار کو قاہرہ میں عرب لیگ کے ہنگامی اجلاس میں اس جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’ایران کی حمایت یافتہ ملیشیائیں عرب ممالک کی سلامتی اور استحکام کے لیے خطرے کا موجب بنی ہوئی ہیں۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں