.

ابوظبی پورٹس کووِڈ-19 کی ویکسینوں کو ذخیرہ اور تقسیم کرنے کا بڑا مرکز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابوظبی کی پورٹس کووِڈ-19 کی ویکسینوں کو بڑے پیمانے پر ذخیرہ کرنے اور انھیں تقسیم کرنے کا ایک بڑا مرکز بن گئی ہیں۔

ابوظبی پورٹس کا لاجیسٹکس مرکز میں کنٹرول درجہ حرارت کا حامل ایک بڑا گودام ہے۔اس کا رقبہ 19ہزار مربع میٹر ہے۔یہ اس وقت مشرقِ اوسط میں ویکسین کی تقسیم کا سب سے بڑا مرکز ہے۔

ابوظبی کے محکمہ صحت نے حال ہی میں نجی اور سرکاری شراکت داری پر مشتمل ایک کنسورشیم قائم کیا ہے۔اس کے تحت عالمی ٹرانسپورٹ کمپنیوں کے ذریعے ابوظبی سے دنیا کے 170 ممالک میں ویکسینیں پہنچائی جارہی ہیں۔

ابوظبی پورٹس کے لاجسٹکس کلسٹر کے سربراہ رابرٹ سوٹن بتاتے ہیں کہ ’’ان کے گودام میں ویکسینیں اور دوسری میڈیکل مصنوعات رکھی جارہی ہیں۔یہاں 12 کروڑ سے زیادہ ویکسینیں 2 سے 8 تک درجہ حرارت میں رکھی جاسکتی ہیں اور ڈیڑھ کروڑ سے دو کروڑ تک ویکسین کی خوراکیں منفی 80 یا اس سے بھی کم درجہ حرارت میں رکھی جاسکتی ہیں۔‘‘

انھوں نے بتایا کہ ’’دنیا بھر سے ویکسینوں کو اس ایک جگہ پرلایا جاسکتا ہے اوراس مرکز سے مینا (مشرقِ اوسط اور شمالی افریقا)، افریقا اور جنوبی ایشیا کے خطوں میں ان ویکسینوں کی ایک سپلائی چین کے ذریعے حمل ونقل کی جاسکتی ہے۔‘‘

واضح رہے کہ ابوظبی پورٹس نے نومبر میں کرونا وائرس کی ویکسین کی سات کروڑ خوراکیں ذخیرہ اور تقسیم کرنے کا اعلان کیا تھا۔اس کا مذکورہ گودام خلیفہ انڈسٹریل زون ابوظبی (کزاڈ)میں واقع ہے جہاں ہر طرح کے کنٹرول درجہ حرارت میں ادویہ اور ویکسینوں کو رکھاجاسکتا ہے۔اس درجہ حرارت کو ایک ڈیش بورڈ کنٹرول کے ذریعے ڈیجیٹل مانیٹر کیا جاسکتا ہے۔