.

یمنی حوثیوں کا سعودی عرب کے جنوبی علاقے کی جانب چھوڑا گیا ڈرون تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب اتحاد نے یمن سے ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کا سعودی عرب کے جنوبی علاقے کی جانب چھوڑا گیا ایک ڈرون فضا ہی میں سراغ لگا کر تباہ کردیا ہے۔

اس ڈرون حملے سے قبل منگل کو علی الصباح حوثی ملیشیا نے سعودی عرب کے جنوبی علاقے جازان کی جانب ایک بیلسٹک میزائل داغا تھا۔یہ میزائل یمن کی سرحد کے نزدیک واقع ایک گاؤں میں گرا تھا اور اس کے نتیجے میں پانچ افراد زخمی ہوگئے تھے۔

دریں اثناء امریکی صدر جوزف بائیڈن کی انتظامیہ نے حوثی ملیشیا کے دو کمانڈروں پر پابندیاں عاید کردی ہیں۔امریکا کے محکمہ خزانہ نے منگل کے روز حوثی ملیشیا کے کمانڈروں منصورالسعدی اور احمد علی احسن الحمزی پر پابندیاں عاید کی ہیں۔ان پر حوثی ملیشیا کی فورسز کے یمنی شہریوں ، سرحدی اقوام اور بین الاقوامی پانیوں میں تجارتی بحری جہازوں پر حملوں کی منصوبہ بندی کا الزام ہے۔

محکمہ خزانہ کے بیان میں اعتراف کیا گیا ہے کہ ’’حوثی ملیشیا ایرانی نظام کے خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کےایجنڈے کو آگے بڑھانے کے لیے کام کررہی ہے۔‘‘

ایران کے حمایت یافتہ دہشت گرد حوثی باغیوں نے سعودی عرب اور یمن میں قانونی حکومت کی عمل داری والے علاقوں پرحالیہ دنوں میں بارود سے لدے ڈرون اور بیلسٹک میزائلوں سے حملے تیز کردیے ہیں۔

عرب اتحاد نے گذشتہ ہفتے کی شب یمن سے حوثی باغیوں کا دارالحکومت الریاض کی جانب داغا گیا ایک بیلسٹک میزائل فضا ہی میں تباہ کردیا تھا۔عرب اتحاد نے اس حملے سے قبل حوثی ملیشیا کے بارود سے لدے چھے ڈرونز کو فضا ہی میں ناکارہ بنا دیا تھا۔ان ڈرونز سے سعودی عرب کے جنوبی شہروں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔