.

لیبیا: وزیراعظم عبدالحمید الدبیبہ کے زیرقیادت نئی حکومت کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی پارلیمان نے وزیراعظم عبدالحمید الدبیبہ کے زیر قیادت قومی اتحاد کی نئی حکومت کی منظوری دے دی ہے۔

لیبیا کے شہر سرت میں بدھ کو پارلیمان کا اجلاس ہوا ہے اور اس میں 100 سے زیادہ ارکان نے قومی اتحاد کی حکومت کی توثیق کی ہے جبکہ صرف چند ایک ارکان نے اس کی مخالفت میں ووٹ دیا ہے۔

لیبیا میں جاری تنازع کے دوران میں یہ پہلا موقع ہے کہ پارلیمان کا سرت میں اجلاس ہوا ہے اور اس نے قومی مفاد میں حکومت کی توثیق کا فیصلہ کیا ہے۔اس سے لیبیا میں گذشتہ ایک عشرے سے جاری خانہ جنگی اور طوائف الملوکی کے خاتمے کی بھی راہ ہموار ہوگی۔

تاہم وزیراعظم عبدالحمید الدبیبہ کے انتخاب کے انداز اور ان کی بھاری بھرکم کابینہ پر لیبیا میں تنقید کی جارہی ہے۔ناقدین نے کابینہ کی تشکیل کے عمل میں بدعنوانیوں کے الزامات عاید کیے ہیں اور کہا ہے کہ اس سے خود حکومت کی قانونی حیثیت کے بارے میں سوال اٹھائے جائیں گے۔

واضح رہے کہ لیبیا میں گذشتہ کئی سال سے دو متوازی حکومتیں چل رہی ہیں۔دارالحکومت طرابلس میں اقوام متحدہ کی تسلیم شدہ قومی اتحاد کی حکومت قائم ہے جبکہ مشرقی شہر بنغازی میں اس کی متحارب انتظامیہ نے نظم ونسق سنبھال رکھا ہے اور اس کو جنرل خلیفہ حفتر کے زیر قیادت لیبی قومی فوج (ایل این اے) کی حمایت حاصل ہے۔