.

نیویارک کے گورنر کے خلاف جنسی اسکینڈل سنگین، چھٹی خاتون نے الزام عائد کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی اخبار "ٹائمز یونین" کے مطابق ایک نئی خاتون نے نیویارک کے گورنر اینڈریو کومو پر جنسی ہراس کا الزام عائد کیا ہے۔ خاتون کا کہنا ہے کہ گذشتہ برس کومو نے انہیں نامناسب طور پر چُھوا تھا۔ اخبار کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ البینی میں گورنر کی سرکاری رہائش گاہ پر پیش آیا۔ ہراس کا شکار ہونے والی خاتون ملازمہ تھی تاہم اس کے نام کا انکشاف نہیں کیا گیا۔ اس طرح ان خواتین کی مجموعی تعداد چھ ہو گئی ہے جنہوں نے تصدیق کی ہے کہ ریاست کے گورنر نے ان کو جنسی طور پر ہراساں کیا یا ان کے ساتھ نا مناسب برتاؤ کیا۔

ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے 63 سالہ گورنر تمام تر الزامات کے باوجود اپنے منصب سے مستعفی ہونے سے انکار کر چکے ہیں۔

کومو کا کہنا ہے کہ وہ اسغاثہ کے زیر نگرانی ان تمام الزامات کی آزادانہ تحقیقات کے نتائج کا انتظار کریں گے۔

کومو کی گورنر کے منصب کے لیے مدت کا اختتام 2022ء میں ہو گا۔ کرونا کی وبا کے پھیلاؤ کے آغاز میں انہیں بڑی مقبولیت حاصل ہوئی تھی تاہم اب انہیں ہر طرف سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

اتوار کے روز سینیٹ میں نیویارک سے تعلق رکھنے والی ڈیموکریٹک خاتون سینیٹر اینڈریا اسٹوارٹ بھی ریاستی پارلیمان میں اپنی ان متعدد ساتھی خواتین کے ساتھ شامل ہو گئیں جن کا مطالبہ ہے کہ کومو اپنے عہدے سے سبک دوش ہو جائیں۔

جمعے کے روز گورنر کے خصوصی اختیارات واپس لینے کے لیے دونوں ایوانوں میں رائے شماری ہوئی۔ یہ خصوصی اختیارات گذشتہ برس دیے گئے تھے تا کہ گورنر کو کرونا کی وبا سے نمٹنے کے لیے انتظامی امور میں آسانی ہو سکے۔