.
کرونا وائرس

یورپی یونین : کرونا پاسپورٹ کے حوالے سے صرف 4 ویکسین تسلیم شدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپی کمیشن کے امور داخلہ کی انتظامیہ کے اعلان کے مطابق کرونا ویکسین لگوا لینے والے افراد کے لیے یورپی کمیشن جس برقی "سبز پاسپورٹ" کے اجرا کا ارادہ رکھتی ہے، اس میں صرف یورپی ڈرگ ایجنسی کی طرف سے اجازت یافتہ ویکسینز کو ہی قبول کیا جائے گا۔

ابھی تک مذکور ایجنسی نے کرونا وائرس کی صرف چار ویکسینز کی منظوری دی ہے۔ ان میں فائزر / بائیو این ٹیک ، موڈیرینا، اسٹرا زینیکا اور جانسن اینڈ جانسن شامل ہیں۔

امور داخلہ کے لیے یورپی کمشنر ایلفا جوہانسن نے صحافیوں کو بتایا کہ "ہم ایک ایسا برقی سرٹفکیٹ بنانا چاہتے ہیں جس سے آپ کا اندراج ان افراد میں ہو جائے جن کے جسم میں اینٹی باڈیز ہے یا پھر آپ کو یورپی ڈرگ ایجنسی کی طرف سے منظور شدہ ویکسین دے دی گئی ہے"۔

یورپی کمیشن کی جانب سے اس سرٹفکیٹ کی تجویز آئندہ بدھ کے سامنے لائی جائے گی۔ اس سے متعلق قانون منظوری کے لیے یورپی پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔

یورپی کمیشن کی سربراہ اورسولا وون ڈیر لائن نے امید ظاہر کی ہے کہ اس تجویز پر عمل سے "لوگ کام یا سیاحت کے واسطے یورپی یونین کے اندر یا اس کے بیرون محفوظ طور پر حرکت کر سکیں گے"۔

سیاحت پر انحصار کرنے والے بعض یورپی ممالک مثلا یونان اور قبرص اس "سبز پاسپورٹ" کا استعمال چاہتے ہیں تا کہ سفر پر عائد سخت قیود سے چھٹکارہ پایا جا سکے۔

دوسری جانب جرمنی اور فرانس نے اس کے حوالے سے زیادہ احتیاطی موقف کا اظہار کیا ہے۔ دونوں ممالک نے خبردار کیا ہے کہ یہ پاسپورٹ امتیازی آلہ کار بن سکتا ہے بالخصوص جب کہ یورپی یونین کے کم سن شہریوں کو رواں سال کے اختتام تک یا آئندہ سال تک کرونا کے خلاف ویکسین نہیں لگائی جا سکے گی۔