.

یمن :حوثی ملیشیا کےاسکول پرمیزائل حملے میں تین بچّے اور15 فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کی حمایت حوثی ملیشیا نے یمن کی گورنری تعز میں واقع ایک اسکول پر میزائل داغا ہے۔اس حملے میں تین کم سن بچّے اور پندرہ یمنی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔

علاقے کے مکینوں نے بتایا ہے کہ تعز کے مغرب میں واقع ضلع قضا میں ایک اسکول میں موجود فوجیوں کو میزائل حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔اس کی زد میں نزدیک کھیلنے والے بچّے بھی آگئے تھے۔ دو جاں بحق بچے سگے بھائی تھے اور تیسرا ان کا رشتہ دار تھا۔

فوجی ذرائع کا کہنا ہے کہ میزائل حملے کی زد میں آنے والے اسکول کو پہلے حوثی باغی بھی فوجی اڈے کے طور پر استعمال کرتے رہے ہیں۔یمنی فوج نے گذشتہ ہفتے ہی حوثی فورسز کو قضا سے ماربھگایا ہے اور اس ضلع پر دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

یمن کے جنوب مغرب میں واقع تعز میں بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ حکومت کے اتحادی جنگجوؤں اور حوثی باغیوں کے درمیان لڑائی میں حالیہ دنوں میں ایک مرتبہ پھر شدت آگئی ہے۔ادھرشمالی صوبہ مآرب میں بھی حوثی ملیشیا اور یمنی فوج کے درمیان خونریز لڑائی جاری ہے۔

یمن میں مختلف محاذوں پر لڑائی میں شدت کے پیش نظر امریکا اور اقوام متحدہ نے سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد اور حوثی ملیشیا کے درمیان جنگ بندی کے لیے کوششیں تیز کردی ہیں۔

امریکا کے یمن کے لیے خصوصی ایلچی نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا تھا کہ یمن بھر میں جنگ بندی کے لیے ایک ’’مناسب منصوبہ‘‘ حوثی قیادت کے سامنے پیش کیا گیا ہے لیکن اس گروپ نے مآرب میں اپنی فوجی کارروائی پر توجہ مرکوز کی ہوئی ہے،وہ اسی کو ترجیح دے رہا ہے اور اس نے جنگ بندی کی تجویز کا کوئی جواب نہیں دیا ہے۔