.

یواے ای:کووِڈ-19 کے 2018 نئے کیسوں کی تصدیق ، چار مریض چل بسے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے منگل کے روز گذشتہ 24 گھنٹے میں کووِڈ-19 کے 2018ء نئے کیسوں کی تشخیص کی اطلاع دی ہے اور پہلے سے اس مہلک وائرس کا شکار مزید چار مریض وفات پاگئے ہیں۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق اب ملک میں کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد تشخیص شدہ کیسوں کی کل تعداد 430313 ہوگئی ہے۔ان میں 1406 مریض وفات پا چکے ہیں۔

گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کا شکار مزید 2651 مریض تن درست ہوگئے ہیں۔ یو اے ای میں اب تک 410736 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔

وام نے مزید اطلاع دی ہے کہ گذشتہ 24 گھنٹے میں کووِڈ-19 کے 208085 ٹیسٹ کیے گئے ہیں اور ان ہی میں سے نئے کیسوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

متحدہ عرب امارات کے صنعتوں اورایڈوانسڈ ٹیکنالوجی کے وزیرسلطان احمد الجابر نے اتوار کو ایک بیان میں کہا تھا کہ ’’ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید نے ملک میں ایڈناک اور دوسرے اداروں کو فعال کردیا ہے تاکہ کووِڈ-19 کی وَباسے درپیش چیلنجز سے نمٹا جاسکے۔‘‘

دریں اثناء حالیہ تحقیقی مطالعات کے مطابق سگریٹ نوش حضرات کووِڈ-19 کی پیچیدگیوں کا زیادہ شکار ہوسکتے ہیں۔اس کے پیش نظر یو اے ای میں معالجین نے تمباکو نوشی کرنے والے افراد کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنی اس ضرررساں عادت کو ترک کردیں۔

کلیولینڈ کلینک سے تعلق رکھنے والے محققین نے کووِڈ-19 کا شکار ہونے والے 7000 سے زیادہ افراد کے طبی ٹیسٹوں کا جائزہ لیا ہے۔ان کے نتائج سے یہ ظاہر ہوا ہے کہ ان میں سے جو لوگ تمباکو نوشی کے عادی تھے،انھیں اس مہلک وائرس کا شکار ہونے کے بعد اسپتال میں لے جانے کی ضرورت پیش آئی ہے اور ان ہی میں سے زیادہ تر کی وفات ہوئی ہے۔