.

طیب ایردوآن جھوٹے خواب بیچ رہے ہیں:داود اوگلو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کی حزب اختلاف فیوچر پارٹی کے سربراہ اور سابق وزیر اعظم احمد داود اوگلو نے حکمراں جماعت 'آق"کی حالیہ کانفرنس کی سامنے آنے والی ان تصاویر پر تنقید کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ تصاویر سے ظاہر ہوتا ہے کہ اجلاس میں کرونا وبا کے ایس اوپیز کا کوئی خیال نہیں کیا گیا حالانکہ اس وقت کرونا وبا اپنے عروج پر ہے۔ کانفرنس کےشرکا نے سماجی دوری اختیار نہیں کی۔ انہوں نے ملک میں اصلاحات کے حوالے سے صدر طیب ایردوآن کی پالیسیوں پر کڑی تنقید کی اور کہا کہ صدر ایردوآن صرف خواب بیچ رہے ہیں۔

ایک تقریب سے خطاب میں احمد داود اوگلو نے کہا کہ حکومت کے پاس خوابوں کو فروخت کرنے کے سوا کچھ نہیں بچا ہے۔ انہوں نے صدر ایردوآن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اب ایسے کیسز نہیں بچے جن کی آڑ میں آپ استحصال کرسکتے ہیں۔ آپ حقائق کے مطابق کام نہیں کررہے ہیں۔ آپ نے سرکاری انتظامیہ کو سیریز میں تبدیل کردیا ہے۔ جو ٹی وی چینلز کے سامنے آپ کے خواب بیچ رہے ہیں۔انہوں نے مرکزی بنک کے گورنر ناجی اغبال کی برطرفی پر بھی تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ "ہم گذشتہ ہفتے پورے ترکی میں آدھی رات کو ایک زلزلے سے گذرے۔ یہ معاشی زلزلہ ، غیر معقول عمل تھا جسے کوئی ذہن قبول نہیں کرسکتا ہے۔

ہفتہ 20 مارچ کو ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے سنٹرل بینک کے گورنر ناجی اغبال کو برطرف کر دیا ، جس کی وجہ سے ترک لیرامزید 17 فی صد نیچے جا گرا۔

داود اوگلو نے بتایا کہ ترکی جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ کانفرنس سے متوقع اصلاحات کی فہرست کا انتظار کر رہا ہے نہ کہ بیرات البیرق کی اصلاحات کی۔

انہوں نے کہا کہ اصلاحات کے بیان میں جمہوری وژن ، قانون اور انصاف کی بالا دستی کی ضرورت ہے۔ اصلاحات کا بیان حقائق کے دائرے میں لکھا گیا ہے ، خوابوں میں نہیں۔ در حقیقت بیرات البیرق کی اصلاحات ہمیں دبانے کے لیے سامنے لائی گئی ہیں۔