.

‘‘قانون نافذ کرنے والے سعودی اداروں نے منشیات خاتمے کا عزم کر رکھا ہے‘‘

سعودی معاشرے میں نشہ آور اشیا سے نمٹنے کا شعور مدد گار ثابت ہو رہا ہے: وزیر داخلہ شہزادہ عبالعزیز بن سعود بن نایف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر داخلہ شہزادہ عبالعزیز بن سعود بن نایف کا کہنا ہے کہ سکیورٹی فورسز منشیات کے خاتمے کی خاطر ڈٹ کر مقابلہ کر رہی ہیں۔ سعودی عرب کے متعلقہ اداروں نے نوے ملین سے زیادہ نشہ آور گولیوں، 7.9 ٹن سے زیادہ حشیش اور 5.5 کلو گرام کوکین کی سمگلنگ کی کوششیں ناکام بنائی ہیں۔

وزیر داخلہ شہزادہ عبالعزیز بن سعود بن نایف نے کہا کہ سعودی سیکیورٹی ادارے منشیات کی لعنت کا مقابلہ ڈٹ کر کر رہے ہیں۔ سعودی معاشرے کو اس آفت میں مبتلا کرنے کی سازش بدترین ہے۔ وزیر داخلہ نے ٹویٹ کیا کہ سعودی معاشرے میں نشہ آور اشیا سے نمٹنے کا شعور مدد گار ثابت ہو رہا ہے۔

شہزادہ عبالعزیز بن سعود بن نایف نے کہا کہ متعلقہ اداروں نے صرف تین ماہ کے دوران 90 ملین سے زیادہ نشہ آور گولیوں، 7.9 ٹن حشیش اور 5.5 کلو گرام کوکین کی سمگلنگ کی کوششیں ناکام بنائیں۔ ادارے یہ مہم برادر اور دوست ممالک کے تعاون اور مسلسل یکجہتی کی بدولت چلا رہے ہیں۔