.

فضائی کمپنیاں حرکت میں آگئیں، کیا فضائی سروس کا منظرنامہ بدل رہا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی سب سے بڑی فضائی کمپنی 'ڈیلٹا ایئر لائن' نے یکم اپریل کو اپنے تمام 1،713 پائلٹوں کو ملازمت سے واپس بلا لیا ہے۔ کرونا وائرس کی وجہ سے فلائٹ آپریشن محدود ہونے کے بعد سیکڑوں ہوابازوں کو رخصت پر بھیج دیا گیا تھا۔ گذشتہ ہفتے ڈیلٹا ایئرلائن کو ہوابازوں کی قلت کے باعث سیکڑوں پروازیں منسوخ کرنا پڑی تھیں جس کے بعد کمپنی نے تمام ہوابازوں کو ڈیوٹی پر بلا لیا ہے۔

پیر کے روز کمپنی نے کہا کہ رواں سال موسم گرما میں پروازوں میں اضافے کی صورت میں 400 کے قریب پائلٹوں کو وقت کی تربیت دی جائے گی۔
ادھر ساؤتھ ویسٹ ایئر لائنز کا کہنا ہے کہ 209 پائلٹ یکم جون کو اپنی رضاکارانہ رخصت سے واپس آئیں گے۔

پائلٹ کالز سے پتہ چلتا ہے کہ امریکی ایئر لائنز کس طرح ممکنہ مصروف موسم گرما کی تیاری کے لیے اپنی کوششیں تیز کر رہی ہیں۔ کوویڈ - 19 ویکسین کی فراہمی کے بعد وبا میں کمی آ رہی ہے اور فضائی سروس ایک بار پھر بحال ہونے لگی ہے۔

یونائیٹڈ ایئر لائن نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ وہ 300 نئے پائلٹوں کو ملازمت فراہم کرے گی۔ یہ اقدام کمپنی کے فیصلوں میں ڈرامائی تبدیلی کی عکاسی کرتی ہے کیونکہ ایک سال قبل کرونا وبا کی وجہ سے کمپنی نے ملازمین کی تنخواہوں میں کمی کے ساتھ قبل از ریٹائرمنٹ اور ملازمین کو عارضی طور پر چھٹی پر بھیجنے کی پالیسی اپنائی تھی۔

بلومبرگ کے مطابق پچھلے سال 122،029 مسافروں نے جبکہ 4 اپریل کو ڈیڑھ ملین سے زیادہ مسافروں نے امریکا میں مقامی سطح پر سفر کیا۔
"یونائیٹڈ" اور "امریکن ایئر لائنز گروپ" نے کہا ہے کہ ان کے طیارے 80 فی صد مسافروں کو لے جا رہے ہیں۔