.

بائیڈن انتظامیہ یو اے ای کے ساتھ دفاعی معاہدوں کی تکمیل کے لئے کوشاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ نے کانگریس کو مطلع کیاہے کہ متحدہ عرب امارات کے ساتھ 23 ارب ڈالر کے معاہدوں پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ ان معاہدوں میں جدید ترین ایف 35 طیاروں، ڈرون طیاروں اور دیگر دفاعی و حربی سامان کی خریداری شامل ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ایک ترجمان کے مطابق امریکی انتظامیہ یو اے ای کے ساتھ ہونے والے دفاعی معاہدوں کو پورا کرنے کے لئے اقدامات اٹھا رہی ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ معاہدے کی تفصیلات پر نظر ثانی کی جارہی ہے اور ان ہتھیاروں کے استعمال کے حوالے سے اماراتی حکام سے مشاورت بھی جاری ہے۔

امریکا میں ڈیموکریٹک پارٹی کے صدر جو بائیڈن نے کرسی صدارت سنبھالنے کے بعد ریپبلکن پارٹی کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے کئے جانے والے معاہدوں کو نظر ثانی کے لئے روک دیا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے متحدہ عرب امارات کی جانب سے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات کے قیام کے بعد یو اے ای کو ہتھیاروں کی فروخت کے معاہدے کی پچھلے سال نومبر میں توثیق کر دی تھی۔

یو اے ای اور امریکا کے درمیان 23٫37 ارب ڈالر کے معاہدے میں 50 ایف 35 جنگی طیارے، 18 MQ-9B ڈرون طیارے اور فضاء سے فضاء اور فضاء سے زمین کو نشانہ بنانے والے میزائل شامل ہیں۔

متحدہ عرب امارات کو ان ہتھیاروں کی فروخت کا ایک بل دسمبر میں کانگریس میں لایا گیا تھا جسے ریپبلکن پارٹی کے ارکان نے ناکام بنا دیا تھا۔