.

سعودی عرب: علماء کی زکاۃ اور صدقات غیر مجاز افراد کو دینے پر تنبیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں مساجد کے آئمہ اور خطیبوں نے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ رمضان المبارک کے دوران زکاۃ، صدقات اور فطرانہ کی رقم نامعلوم افراد کو دینے کے بجائے صرف مجاز اداروں کو دیں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کی زکاہ اور فطرانے کی رقم خطرناک عناصر کے ہاتھ نہیں لگ رہی ہے۔

مملکت کی مساجد میں آئمہ کرام نے ماہ صیام میں زکاۃ اور صدقات کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ ایک مسلمان کو زکاۃ ادا کرنے یا صدقات و فطرانہ ادا کرتے وقت سوچ سمجھ کر قدم اٹھانا چاہیے۔ بہتر ہے کہ شہری زکاۃ اور صدقات کی ادائی کے لیے حکومت کی طرف سے پیش کردہ 'احسان' 'فرجت' اور 'جود للاسکان' جیسی ایپس کا استعمال کریں تاکہ ان کے صدقات اور خیرات کی رقم مستحق افراد تک پہنچانے میں مدد ملے۔

قبل ازیں سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امور ڈاکٹر عبداللطیف آل الشیخ نے ایک نوٹس جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ بعض نامعلوم لوگ انٹرنیٹ کے ذریعے فنڈ ریزنگ کر رہے ہیں۔ ایسے لوگ سعودی عرب میں شہریوں سے زکاۃ اور فطرانے کی رقوم حاصل کرنے کی تلاش میں ہیں۔ اس لیے شہری زکاۃ اور فطرانے سمیت کسی قسم کے صدقات کی ادائیگی کے وقت اس بات کو یقینی بنائیں کہ رقم کسی غیر مجاز شخص کے ہاتھ میں نہ لگے۔