.

فرانس میں چاقو سے حملہ کرنے والا تونسی کون ہے ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس میں سیکورٹی اور عدالتی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ جمعے کے روز فرانسیسی پولیس کی ایک خاتون اہل کار کو چاقو کے وار سے ہلاک کرنے والا شخص تونسی شہریت رکھتا ہے۔ ذرائع کے مطابق 36 سالہ حملہ آور "جمال قرشان" کا تعلق تونس کے مشرقی علاقے سوسہ سے ہے۔ یہ واقعہ دارالحکومت پیرس کے قریب واقع شہر رامبوئے میں پیش آیا۔

فرانسیسی ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ مذکورہ شخص 2009ء میں فرانس آیا تھا۔ اس نے 2019ء میں قیام کا خصوصی اجازت نامہ حاصل کیا۔ بعد ازاں دسمبر 2020ء میں قیام کا کارڈ حاصل کیا جس کی میعاد دسمبر 2021ء تک کی ہے۔

فرانس میں جمال ڈلیوری ڈرائیور کے طور پر کام کر رہا تھا۔ وہ رامبوئے شہر میں سکونت پذیر تھا۔ پولیس اور انٹیلی جنس کے سیکورٹی شعبوں کے ریکارڈ میں اس کا نام موجود نہیں ہے۔

پولیس نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے لیا
پولیس نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے لیا

فیس بک پر کی جانے والی پوسٹوں میں جمال بیرونی سرگرمیوں ، گھومنے پھرنے اور تفریح کرنے سے شغف رکھنے والا نوجوان ظاہر ہوتا ہے۔ تاہم اپریل 2020ء سے قرنطینہ کے عرصے کے ساتھ ہی وہ تقریبا روزانہ کی بنیاد پر نماز، قرآنی آیات، اذکار اور بعض مبلغین کی ستائش پر مبنی پوسٹیں کرنے لگا تھا۔

چاقو سے حملے کے حالیہ واقعے کے بعد پولیس نے جمال کے حلقے سے تعلق رکھنے والے 3 افراد کو حراست میں لیا۔ جمال کے موبائل فون اور لیپ ٹاپ کی جانچ کی جا رہی ہے۔ اس کا مقصد یہ جاننا ہے کہ حملے کے بعد پولیس کی فائرنگ سے ہلاک ہو جانے والے جمال نے یہ کارروائی ذاتی تصرف کے طور پر کی تھی یا نہیں۔

پولیس نے تلاشی  کے لئے قرشان کے گھر کو گھیرے میں لے لیا
پولیس نے تلاشی کے لئے قرشان کے گھر کو گھیرے میں لے لیا