.

وڈیو : بھارتی خاتون کی کرونا سے متاثرہ ماں کو منہ کے ذریعے آکسیجن دینے کی کوشش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گذشتہ چند گھنٹوں کے دوران میں ایک بھارتی خاتون کی وڈیو زیر گردش آئی ہے جس میں یہ خاتون اسٹریچر پر لیٹی ہوئی اپنی ماں کے منہ پر اپنا منہ رکھ کر انہیں آکسیجن پہنچانے کی کوشش کر رہی ہے۔ خاتون کو ماں کو ریاست اتر پردیش کے ایک ہسپتال میں لایا گیا تھا۔ بھارت میں کرونا وائرس کی دوسری لہر 13 روز سے جاری ہے جس کے نتیجے میں ہسپتال کرونا وائرس سے متاثرہ افراد سے کھچا کھچ بھرے ہوئے ہیں۔ بھارت میں اب تک کرونا وائرس کے تصدیق شدہ کیسوں کی مجموعی تعداد 2 کروڑ سے زیادہ ہو چکی ہے۔ ان میں 222383 متاثرین فوت ہو چکے ہیں۔

زیر گردش آنے والی مذکورہ وڈیو میں نوجوان خاتون کو دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ اپنی زندگی خطرے میں ڈال کر اپنی ماں کی زندگی بچانے کی تگ و دو میں ہے۔ یہ بیٹی جانتی ہے کہ کرونا کا متعدی مرض محض ماں کے منہ کے قریب ہونے سے ہی اس کے اندر منتقل ہو جائے گا مگر اس نے اپنی جان کی پروا نہیں کی۔ مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق عمر رسیدہ خاتون کو بچانے کی کوششیں کام نہیں آئیں اور وہ گھر سے ہسپتال لائے جانے کے کچھ دیر بعد چل بسی۔

واضح رہے کہ کرونا وائرس سے اموات کے لحاظ سے بھارت کا اس وقت امریکا اور برازیل کے بعد دنیا میں تیسرا نمبر ہے۔ کرونا کے متاثرین کی تعداد کے لحاظ سے بھارت امریکا کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔ ملک کو اس وقت کرونا کی دوسری شدید ترین لہر کا سامنا ہے۔ تجزیہ کاروں نے خبردار کیا ہے کہ آکسیجن کی کمی اور صحت کے ںظام کے ڈھیر ہو جانے کے سبب اموات کی حقیقی تعداد دس گنا زیادہ ہو سکتی ہے۔ اس صورت حال میں بھارتی عوام کے اندر شدید غم و غصہ پایا جا رہا ہے۔