.

ایران کے شہر بوشہرمیں واقع جوہری پاور پلانٹ کے نزدیک آتش زدگی کا واقعہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے جنوب مغربی شہر بوشہر میں واقع جوہری پاور پلانٹ کے نزدیک آگ لگ گئی ہے۔ایرانی میڈیا کے مطابق آتش زدگی کے اس واقعہ کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی۔

سوشل میڈیا پر دسیوں لوگوں نے اس شدید آگ کی فوٹیج شیئر کی ہے اور اس میں آگ کے شعلے بلند ہوتے دیکھے جاسکتے ہیں جبکہ راہگیر اس کے نزدیک سے گذر رہے ہیں۔

ایران کے نیم سرکاری میڈیا نے بھی آتش زدگی کے اس واقعہ کی اطلاع دی ہے لیکن ایرانی حکومت نے ہنوز اس کے بارے میں کوئی سرکاری بیان جاری نہیں کیا ہے۔

واضح رہے کہ ایران میں جون 2020ء سے فوجی ، جوہری اور صنعتی تنصیبات میں آتش زدگی یا دھماکوں کے متعدد واقعات پیش آچکے ہیں۔12 گذشتہ سال جولائی کو ملک کے جنوب مغرب میں واقع شہر ماہشہر میں پیٹرو کیمیکل کے ایک بڑے پلانٹ میں گرم تیل رسنے کے بعد کنٹینروں میں آگ لگ گئی تھی۔ماہشہر تیل کی دولت سے مالامال جنوب مغربی صوبہ خوزستان میں واقع ہے۔

دارالحکومت تہران میں 11 جولائی2020ء کو ایک اقامتی عمارت میں گیس کے دھماکے سے ایک شخص زخمی ہوگیا تھا۔10 جولائی کو تہران کے مغربی حصے سے ایک نامعلوم دھماکے کی آواز سنی گئی تھی لیکن اس کی نوعیت معلوم نہیں ہوسکی تھی۔

تہران کے شمال میں جولائی میں ایک میڈیکل کلینک میں دھماکے میں 19 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ حکام کا کہنا تھا کہ یہ دھماکا گیس کے اخراج کے نتیجے میں ہوا تھا۔جولائی ہی میں ایران کے شمال مغرب میں واقع شہر تبریز میں سیلو فین پرنٹنگ کی ایک فیکٹری میں آگ لگ گئی تھی۔چار جولائی کو ماہشہرمیں واقع پیٹرو کیمیکل کے ایک کمپلیکس میں کلورین گیس کے اخراج سے 70 سے زیادہ ورکر بیمار پڑ گئے تھے۔

26 جون 2020ء کو تہران کے مشرق میں واقع پارچین میں فوجی اور اسلحہ کے اڈے پر دھماکا ہوا تھا۔ یہ دھماکا بھی اس بیس سے باہر گیس کے اخراج کے نتیجے میں ہوا تھا۔