.

اسرائیلی بمباری کے جواب میں حماس کے اسرائیل پر 200 راکٹ حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی تحریک مزاحمت 'حماس' کے عسکری ونگ القسام بریگیڈ نے غزہ پر اسرائیلی بمباری کے جواب میں اسرائیلی شہروں‌پر 200 سے زائد راکٹ داغے ہیں۔

ترجمان ابو عبیدہ نے بتایا ہےکہ منگل کے روز القسام بریگیڈ نے اسدود اور عسقلان شہروں پر پانچ منٹ میں 137 راکٹ داغ کر دشمن پر اپنی عسکری صلاحیت ثابت کردی ہے۔ ایک بیان میں انہوں‌ نے کہا کہ صرف پانچ منٹ میں القسام بریگیڈ نے ڈیڑھ سو کے قریب راکٹ داغے گئے ہیں۔ حماس کی طرف سے بئرسبع کے علاقے میں 100 راکٹ فائر کیے گئے۔

القسام بریگیڈ کا کہنا ہے کہ وہ اسرائیلی بمباری کے جواب میں صہیونی ریاست پر راکٹ حملوں میں مزید اضافہ کرے گی۔

القسام بریگیڈ کا کہنا ہےکہ اس نے اسرائیل کےدارالحکومت تل ابیب اور بن گوریون ہوائی اڈے کے اطراف میں 110 راکٹ داغے ہیں۔ یہ راکٹ حملے غزہ کی پٹی میں شہری آبادی کو نشانہ بنانے کا جواب ہے۔

آج بدھ کی صبح فلسطینی مزاحمت کاروں اور اسرائیل کے درمیان گھمسان کی لڑائی کے دوران تل ابیب میں‌بھی خطرے کے سائرن بجائے گئے۔

اسرائیل کے عرانی ٹی وی چینل 13کے مطابق بئر سبع میں اسرائیل کے فضائی دفاع اڈے نیفاٹیم پر فلسطینوں‌ نے راکٹ حملے ہیں جس کے نتیجے میں زور دار دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں۔

اسرائیلی شہروں پر یہ راکٹ حملے اس وقت کیے گئےجب اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں الجوہرہ ٹاور پر بمباری کرکے اسے تباہ کردیا۔ اس ٹاور میں 160 فلسطینی خاندان مقیم تھے۔
اسرائیلی فوج نے ھنادی ٹاور کو بھی بمباری سے تباہ کردیا ہے جس میں 80 فلسطینی خاندان موجود تھے۔

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے آج بدھ کے روز وسطی شہر اللد میں‌ہنگامی حالت نافذ کرتے ہوئے پولیس کو الرٹ کر دیا ہے۔ اس سے قبل اس شہر میں عرب باشندوں اور اسرائیلی پولیس کےدرمیان جھڑپیں ہوئی ہیں۔