.

حوثی نشانچی نے 4 سالہ بچی کو گولی مار دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مغربی یمن کے علاقے الحدیدہ کے جنوب میں حیس شہر میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے ایک جنگجو نشانہ باز نے چار سالہ بچی کو گولی مار دی جس کے نتیجے میں بچی شدید زخمی ہوگئی۔

حیس کے طبی ذرائع کےمطابق ایک حوثی جنگجو نے چار سالہ امتنان احمد عبدہ کو گولی ماری۔ گولی اس کے دائیں کندھے سے پار ہوگئی جس کےنتیجے میں اس کی کندھے کی ہڈی ٹوٹ گئی۔

بچی کو زخمی حالت میں 'ڈاکٹررز ود آؤٹ باؤنڈریز' تنظیم کے اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں اس کا علاج جاری ہے۔

حوثی ملیشیا کی طرف سے حیس کے علاقے میں مقامی آبادی کو نشانہ بنائے جانے کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ حوثی ملیشیا نے امتنان

احمد کے خاندان کی عید کی خوشی چھین کر انہیں عید کےموقع پر دکھ اور صدمے سے دوچار کیا ہے۔

اقوام متحدہ اور عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی میں حوثی ملیشیا الحدیدہ میں جنگ بندی معاہدے کی کھلی خلاف ورزیوں کی مرتکب ہو رہی ہے۔