.

ایرانی القدس ملیشیا کے سربراہ اسماعیل قآنی کا حماس کے سربراہ کو فون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پر وحشیانہ اسرائیلی بمباری کے جلو میں ایرانی پاسداران انقلاب کی سمندر پار کارروائیوں کی نگران 'فیلق القدس' کے سربراہ بریگیڈیئر اسماعیل قآنی نے اسلامی تحریک مزاحمت 'حماس' کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ھنیہ سے ٹیلیفون پر بات چیت۔

حماس کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ فیلق القدس کے سربراہ اسماعیل قآنی نے القدس اور غزہ میں اسرائیلی فوج کی کارروائیوں کو جنگی جرائم قرار دیتے ہوئے ان کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم فلسطینی قوم کے خلاف جاری اسرائیل کی وحشیانہ کارروائیوں کی مذمت کرتےہیں اور فلسطینی قوم کےساتھ ہیں۔

یہ پیش رفت ایک ایسےوقت میں‌سامنے آئی ہے جب کل ہفتے کے روز اسرائیلی فوج نے مزید کمک غزہ کی سرحد پر تعینات کی ہے۔ العربیہ اور الحدث چینل کے نامہ نگاروں کےمطابق اسرائیلی فوج نے غزہ پر شدید بمباری جاری رکھی ہوئی ہے۔ دوسری طرف غزہ سے فلسطینی مزاحمت کاروں نے تل ابیب سمیت دوسرے اسرائیلی شہروں پر دسیوں راکٹ برسائے ہیں۔
اسرائیلی پولیس کے مطابق فلسطینیوں کے راکٹ حملوں میں تل ابیب کے قریب ایک شخص ہلاک ہوگیا۔

ادھر بن گوریان ہوائی اڈے پر داغے گئے متعدد راکٹ مار گرائے گئے جب کہ رامات جان کے مقام پر راکٹ گرنےسے متعدد عمارتوں کو نقصان پہنچا۔

خیال رہے کہ گذشتہ سوموار سے غزہ کی پٹی پر جاری اسرائیل کی وحشیانہ کارروائی میں اب تک145 فلسطینئ شہید اور 1050 زخمی ہوچکے ہیں۔ شہدا میں 39 کم سب بچے بھی شامل ہیں۔40 زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔