.

عراق فضائی دفاعی سسٹم خریدنے کے لیے پُر عزم ، امریکا کی پابندیوں کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی پارلیمنٹ میں امن اور دفاع کمیٹی کے نائب سربراہ نائف الشمری کے مطابق حکومت آئندہ مہینوں کے دوران میں ایک فضائی دفاعی نظام خریدنے کا معاہدہ کرے گی۔

ہفتے کے روز ایک اخباری بیان میں الشمری نے بتایا کہ 2021ء کے مالیاتی بجٹ میں مسلح افواج کو جدید آلات سے لیس کرنے کے لیے رقم مختص کی گئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کمیٹی نے اس حوالے سے وزیر دفاع اور فضائی دفاع کے کمانڈر کے ساتھ کئی ملاقاتیں کی ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل امریکی رپورٹوں میں عراقی ارکان پارلیمنٹ کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ عراقی حکومت روسی S-400 فضائی دفاعی سسٹم کی خریداری کے لیے بات چیت پر غور کر رہی ہے۔ تاہم امریکی وزارت خارجہ اعلان کر چکی ہے کہ روس سے مذکورہ نظام کی خریداری کا فیصلہ کرنے کی صورت میں عراق پر پابندیاں عائد کی جا سکتی ہیں۔

ماسکو نے گذشتہ برس کئی بار یہ باور کرایا تھا کہ وہ اسلحے سے لیس کرنے اور عسکری تعاون کے حوالے سے عراق کی درخواستوں پر عمل درامد کے لیے تیار ہے۔

یاد رہے کہ عراق 2017ء سے روسی فضائی دفاعی سسٹم خریدنے کی کوشش کر رہا ہے۔ تاہم امریکا کی جانب سے اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کی دھمکیاں اس حوالے سے مذاکرات کے آڑے آ رہی ہیں۔