.

ایردوآن مشرق وسطی میں تشدد کی آگ کو مزید بھڑکا رہے ہیں: واشنگٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

واشنگٹن نے ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن کے بیان کی مذمت کرتے ہوئے زور دیا ہے کہ وہ ایسے اشتعال انگیز بیانات سے اجتناب کریں جن کے نتیجے میں مشرق وسطی میں تشدد کی آگ مزید بھڑکے۔

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے منگل کے روز کہا کہ امریکا ترک صدر کے حالیہ یہود دشمن بیان کی شدید مذمت کرتا ہے جو تشدد کو بھڑکائے گا۔

ایردوآن نے پیر کے روز اپنے بیان میں امریکی صدر جو بائیڈن پر کڑی تنقید کی تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل کو اسلحہ فراہم کر کے بائیڈن نے اپنے ہاتھوں کو خون میں رنگ لیا ہے۔

ترک صدر نے بیان میں اسرائیل کو دہشت گرد ریاست قرار دیا جو بچوں اور عورتوں کو اس طرح قتل کر رہی ہے جس کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔

یاد رہے کہ ترکی اور اسرائیل کے درمیان جنم لینے والے اختلافات کے باوجود دونوں ممالک کے تجارتی تعلقات منقطع نہیں ہوئے۔ غزہ کے حالیہ واقعات رونما ہونے سے پہلے انقرہ نے تل ابیب کے قریب آنے اور تعلقات کو دوبارہ سے معمول پر لانے کی کوشش کی۔