.

اسرائیلی فوج کی غزہ پر شدید بمباری،6 فلسطینی شہید،اسرائیل پر200 راکٹ حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کل بدھ کے روز اسرائیلی فوج نے فلسطین کے جنگ زدہ علاقے غزہ کی پٹی پر شدید بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں مزید 6 فلسطینی شہید ہوگئے۔

العربیہ اور الحدث ٹی وی چینلوں کے نامہ نگاروں کے مطابق اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے علاقے خان یونس پر توپ خانے سے گولہ باری کرنے کے ساتھ بئر نعجہ کےمقام پر دھواں چھوڑنے اور فاسفورس بموں کا بھی استعمال کیا ہے جس کے نتیجےمیں متعدد فلسطینی شہید اور زخمی ہوگئے۔

ادھر کل بدھ کے روز غزہ کی پٹی سے اسرائیل پر 200 راکٹ داغے گئے۔ ان میں سے 7 رکٹ غزہ کی سرحد کے قریب واقع یہودی کالونیوں پر گرے جس کے نتیجے میں مادی نقصان پہنچا ہے۔
العربیہ کے نامہ نگار کے مطابق غزہ سے اسدود کے علاقے میں ایک عمارت پر راکٹ داغے گئے۔ جنوبی اسرائیل میں راکٹ حملوں کی وجہ سے خطرے کے سائرن بجائے گئے۔ مشرقی حیفا اور شمالی اسرائیل کے شہر الجلیل میں خطرے کے سائرن بجائے گئے ہیں۔

ادھر اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی سے اسرائیل پر 9 روز میں 4 ہزار راکٹ داغے گئے ہیں۔

عبرانی ٹی وی چینل کے مطابق غزہ کی پٹی سے اسرائیل پر متعدد راکٹ برسائے گئے جب کہ لبنان سے بھی عکا اور حیفا پر راکٹ حملے کیے گئے ہیں۔ اسرائیلی فوج نے توپ خانے سے ان راکٹوں کا جواب دیا۔

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی میں فلسطینیوں کے راکٹ حملوں کے جلو میں فضائی کارروائی میں مزید توسیع کی ہے۔ گذشتہ روز خان یونس، رفح اور دیگر مقامات پر 52 طیاروں نے 25 منٹ میں 40 اہداف کو کو نشانہ بنایا ہے۔

ادھر لبنانی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے گراڈ راکٹوں کے 6 لانچنگ پیڈ کا پتا چلایا ہے تاہم وہاں سے کوئی راکٹ نہیں داغا گیا۔