.

حوثی باغیوں نے سعودی عرب کے امن اقدام کا کوئی جواب نہیں دیا: سعودی سفیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں متعین سعودی عرب کے سفیر محمد آل جابر نے کہا ہےکہ یمن میں قیام امن کے حوالے سے مملکت کی طرف سے جو پیش کش کی گئی تھی ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے اس کا کوئی جواب نہیں دیا۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ'ٹویٹر' پر پوسٹ کردہ ٹویٹس میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے گذشتہ روز یمن کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی ٹم لینڈر کنگ اور اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب مارٹن گریفتھس سے بھی ملاقات کی۔

آل جابر نے کہا کہ حوثی ملیشیا نے سعودی عرب کی طرف سے یمن میں قیام امن اور وسیع تر جنگ بندی کے حوالے سے پیش کردہ امن فارمولے کا کوئی جواب نہیں دیا۔ انہوں نےیمنی عوام کی مشکلات بالخصوص مآرب کے علاقے میں لاکھوں افراد کے گھر ہونے کی تمام ذمہ داری حوثی ملیشیا پرعاید کی۔

قبل ازیں یمن کے لیے امریکی مندوب نے یمنی حکومت کی سیاسی حل کے لیے کوششوں کوں کا خیر مقدم کرتے ہوئےحوثی ملیشیا پر بھی جنگ روکنے اور امن کی راہ اپنانے کی ضرورت پر زور دیا تھا۔

ادھر خلیج تعاون کونسل کےسیکرٹری نایف الحجرف نے کل منگل کے روز الریاض میں اقوام متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس سےملاقات کی۔ ان کا کہنا تھا کہ یمن میں قیام امن کی حمایت کے لیے ان کاموقف واضح ہے اور وہ ملک میں جاری تنازع کے سیاسی حل کے لیے یمن کی آئینی حکومت کی کوششوں کو سراہتے ہیں۔