.

دبئی کی الامارات ائیرلائنز یکم جولائی سے وینس کے لیے پروازیں چلائے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دبئی کی الامارات ائیرلائنز(ایمریطس) نے یکم جولائی سے وینس کے لیے اپنی پروازیں بحال کرنے کا اعلان کیا ہے۔متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق دبئی اور وینس کے درمیان ہفتے میں تین پروازیں چلیں گی اور اس روٹ پر پروازوں کی بحالی کا مقصد متحدہ عرب امارات اور اٹلی کے درمیان تجارت اور سیاحت کا فروغ ہے۔

وام کے مطابق دبئی کی ملکیتی فضائی کمپنی جولائی سے اٹلی کے شہرمیلان کے لیے بھی اپنی پروازوں کی ہفت وار تعداد میں اضافہ کرے گی اور آٹھ کے بجائے دس پروازیں چلائے گی۔ان میں سے روزانہ ایک پرواز دبئی سے میلان اور نیویارک جے ایف کے روٹ کے لیے ہوگی۔دبئی اور میلان کے درمیان ہفتے میں تین واپسی کی پروازیں ہوں گی۔

ان نئی پروازوں کے بعد الامارات کی اٹلی کے چار شہریوں کے لیے ہفتے میں 21 پروازیں ہوں گی۔الامارات ان کے علاوہ اطالوی دارالحکومت روم کے لیے ہفتے میں پانچ پروازیںاور بولونا کے لیے تین پروازیں چلا رہی ہے۔

وام نے مزید کہا کہ الامارات کی پروازوں کے مسافروں کو اٹلی پہنچنے کے بعد قرنطین میں رہنے کی ضرورت نہیں ہوگی کیونکہ کووِڈ-19 کے ٹیسٹ انتظامات کے بعد یہ پروازیں چلائی جارہی ہیں اور اٹلی کے سفر پر روانہ ہونے والے مسافروں کے پاس کووِڈ-19 کے ٹیسٹ کا منفی نتیجہ ہونا چاہیے۔

الامارات ائیرلائنز کے چیئرمین اور چیف ایگزیکٹوآفیسر شیخ احمد بن سعید آل مکتوم نے ’کووِڈ ٹیسٹ فلائٹ انتظام‘ کا خیرمقدم کیا ہے اور اطالوی اور اماراتی حکام کا بین الاقوامی ٹریول کی بحالی اور سفر میں سہولت کاری کے لیے کوششوں پر شکریہ ادا کیا ہے۔

انھوں نے مزید کہاکہ ’’ایک عالمی تجارتی مرکز اور200سے زیادہ شہریتوں کے حامل افراد کا مسکن ہونے کے ناتے دبئی اور متحدہ عرب امارات نے کمیونٹیوں کو کرونا وائرس کی وَبا سے محفوظ رکھنے کے لیے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کیا ہے۔لوگوں کو ویکسین لگائی گئی ہے اور تفریح گاہوں سے لے کر اسکولوں ، کاروباری مراکز اور ہوائی اڈوں تک تحفظِ صحت کے لیے پروٹوکولز کی پاسداری کی گئی ہے۔‘‘

2 جون سے الامارات کی پروازوں سے اٹلی جانے والے دو سال اور اس سے زیادہ عمر کے تمام مسافروں کے پاس کووڈ-19کے پی سی آر کے منفی ٹیسٹ رپورٹ ہونی چاہیے اور یہ ٹیسٹ رپورٹ روانگی سے 48 گھنٹے قبل تک کارآمد ہونی چاہیے۔