.

انتونیوگوتیریس:انسدادبدعنوانی کےعالمی نیٹ ورک کےقیام سے متعلق’الریاض اقدام‘کاخیرمقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیوگوتیریس نے دنیا میں بدعنوانی کے خاتمے کی کوششوں کومربوط بنانے کی غرض سے عالمی نیٹ ورک کے قیام کے لیے’الریاض اقدام‘ کا خیرمقدم کیا ہے۔سعودی عرب نے دنیا کی انسدادبدعنوانی کے شعبے میں فعال ایجنسیوں کے اس عالمی نیٹ ورک کے قیام کی غرض سے فنڈز مہیا کیے ہیں۔

گلوبل آپریشنل نیٹ ورک آف کرپشن لا انفورسمنٹ اتھارٹیز (گلوب نیٹ ورک) کے قیام کی تجویز سعودی عرب نے گذشتہ سال اپنی گروپ 20 کی صدارت کے دوران میں پیش کی تھی۔اس نیٹ ورک کے قیام کا مقصد بین الاقوامی سطح پر بدعنوانیوں کے خاتمے کے لیے کوششوں کو مضبوط اور مربوط بنانا ہے۔

سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیریس نے جمعرات کے روز اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے کرپشن کے خلاف خصوصی اجلاس کے نام ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ ’’اس نیٹ ورک کی مدد سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حکام سرحدپار باضابطہ تعاون کے ذریعے قانونی عمل کو بروئے کار لائیں گے۔اس سے اعتماد کی فضا پیدا کرنے میں مدد ملے گی اور کرپشن کے قصور واروں کو قانون کے کٹہرے میں لایا جاسکے گا۔‘‘

جنرل اسمبلی کے کرپشن کے خلاف اس پہلے اجلاس میں ان کا یہ ویڈیو پیغام سنایا گیا ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ ’’ہم یہ امید کرتے ہیں گلوبل نیٹ ورک سے تمام ممالک کو کرپشن کی تحقیقات اور اس کے ذمے داروں کے خلاف قانونی کارروائی کے لیے عملی حل اور ذرائع دستیاب ہوں گے اور موجودہ فریم ورکس کو بھی تقویت ملے گی۔‘‘

گلوبل نیٹ ورک کے قیام کے لیے ابتدائی رقوم مملکت سعودی عرب کی حکومت نے اپنی گروپ 20 کی صدارت کے وقت مہیّا کی تھی۔اس دوران میں وہ دنیا کی 20 بڑی معیشتوں کی اس تنظیم کے اینٹی کرپشن ورکنگ گروپ کا سربراہ بھی رہا تھا۔

اس گلوب نیٹ ورک کے صدردفاترآسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں ہوں گے اور یہ اقوام متحدہ کے دفتر برائے ڈرگز اور کرائم (یواین او ڈی سی) کی نگرانی میں کام کرے گا۔

سعودی عرب کی انسدادبدعنوانی اتھارٹی (نزاہہ) کے صدر مازن ابراہیم الکہموس کا کہنا ہے کہ بہت سے ممالک کو اس وقت بھی اینٹی کرپشن کے نیٹ ورکس تک رسائی حاصل نہیں ہے، ایسا خواہ عدم مرکزیت کے عمل یا صلاحیت اوروسائل کی وجہ سے ہے مگر وہ اس رسائی سے محروم ہیں۔جی 20 کے الریاض اقدام کے تحت گلوب نیٹ ورک کی تشکیل اسی خلیج کو پاٹنے کے لیے کی جارہی ہے۔‘‘