.

ابوظبی:عوامی مقامات میں داخلے کے لیے کووِڈ-19 کی ویکسین اورمنفی پی سی آرٹیسٹ کی شرط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں شامل آبادی کے لحاظ سے دوسری بڑی امارت ابوظہبی نے 15 جون سے شاپنگ مالز، ریستوران، کیفے اور دیگر عوامی مقامات تک رسائی صرف ان لوگوں تک محدود کرنے کا فیصلہ کیا ہے جنھیں کووِڈ-19 کی ویکسین لگ چکی ہے یا جن کا حال ہی میں پی سی آر کا منفی ٹیسٹ کیا گیا ہے۔

ابوظبی نے نئے قواعدوضوابط کا اعلان بدھ کودیر گئے کیا ہے۔سات امارتوں پر مشتمل متحدہ عرب امارات میں گذشتہ تین ہفتوں کے دوران کرونا وائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں قریباً دُگنا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ یواے ای میں بدھ کو کووِڈ کے 2179 نئے کیس ریکارڈ کیے گئے جبکہ 17 مئی کو 1229 کیسوں کی تشخیص ہوئی تھی۔

ابوظہبی کے میڈیا دفترنے بتایا کہ ان پابندیوں کا اطلاق عوامی مقامات ،جم، ہوٹلوں ،عوامی پارکوں، ساحل سمندر، سوئمنگ پولز، تفریحی مراکز، سینما گھروں اور عجائب گھروں پر بھی ہوگا۔

ان مقامات پر آنے والے افراد کو یہ ثابت کرنا ہوگا کہ انھیں کووِڈ-19 کی ویکسین لگائی جاچکی ہے یا حال ہی میں ان کاسرکاری موبائل ایپ پر کووڈ-19 کا منفی پی سی آر ٹیسٹ کیا گیا ہے اوروہ اس کی مکمل تفصیل اس ایپ ظاہر ہورہی ہے۔

اگر کسی شخص کو کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگ چکی ہے توسرکاری موبائل ایپ اس کو سبز رنگ سے ظاہر کرےگی اگر اس شخص کے پی سی آر کی رپورٹ منفی ہے تو وہ بھی سبز رنگ سے ظاہر ہوگی۔

جن افراد کو ابھی تک ویکسین کی کوئی خوراک نہیں لگی ہے،انھیں اپنی سبز حیثیت برقرار رکھنے کے لیے ہر تین دن کے بعد ٹیسٹ کرانے کی ضرورت ہوگی۔ ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوانے والے شخص کو ہر 30 دن کے بعد ایپ پر اپنی سبز حیثیت کی تصدیق کرنا ہوگی۔

متحدہ عرب امارات نے گذشتہ ماہ اعلان کیا تھا کہ 6 جون سے شادیوں،عوامی تقریبات اور سماجی سرگرمیوں میں صرف ان لوگوں کو شرکت کی اجازت ہوگی جو یہ ثابت کر سکیں گے کہ انھیں ویکسین لگ چکی ہے۔

متحدہ عرب امارات میں حکومت کی جانب سے آسٹرازینکا، فائزر،بائیو این ٹیک، سائنوفارم اور اسپوتنک پنجم ویکسینیں لگائی جارہی ہیں۔اس وقت وہ شہریوں اور مکینوں کو ویکسین لگانے کی شرح کے اعتبار سے دنیا میں سب سے پہلے نمبر پر ہے۔ابوظہبی میں چینی ساختہ سائنوفارم کی ویکسین لگوانے والوں کو اب فائزر،بائیو این ٹیک کی ویکسین کی اضافی خوراک لگائی جارہی ہے۔