.

مارب میں حوثیوں کی وحشیانہ بم باری ، وڈیو میں الم ناک مناظر سامنے آ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں جمعرات کی شام مارب شہر میں ایک مسجد اور خواتین کی جیل پر حوثی ملیشیا کے حملے کے نتیجے میں ابتدائی رپورٹ کے مطابق کم از کم 8 افراد جاں بحق اور 27 زخمی ہو گئے۔ بیلسٹک میزائلوں اور دو بارودی ڈرون طیاروں کے ذریعے کیے گئے حملے سے ہونے والی تباہی کا حجم ایک وڈیو کلپ میں سامنے آیا ہے۔

مذکورہ وڈیو میں ایک عینی شاہد نے حوثیوں کی وحشیانہ بم باری کے سبب اپنے گھر کو پہنچنے والے نقصان کے بارے میں بتایا۔ اس کے مطابق حملے نے بچوں کے اندر خوف و دہشت پیدا کر دی۔

حوثی ملیشیا نے جمعرات کی شام مارب شہر پر مسلسل بم باری کی۔ اس دوران ایک رہائشی علاقے میں ایک مسجد کو اس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہاں نماز مغرب ادا کی جا رہی تھی۔ علاوہ ازیں مارب صوبے کی پولیس کے زیر انتظام خواتین کی ایک جیل پر بھی بم باری کی گئی۔ اس دوران میں جائے وقوع کی جانب جانے والی ایمبولینس کی گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ یہ بات یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بتائی۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ حملے میں ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا قوی امکان ہے۔ زخمیوں میں خواتین اور طبی عملے کے افراد شامل ہیں۔ ایمبولینس کی 4 گاڑیوں کو نقصان پہنچا جن میں سے 2 گاڑیاں مکمل طور پر ناکارہ ہو گئیں۔

یاد رہے کہ چند روز قبل حوثی ملیشیا نے الروضہ کے علاقے میں ایک فیول اسٹیشن پر اسی نوعیت کا حملہ کیا تھا۔ اس کے نتیجے میں 21 شہری جاں بحق اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔ علاوہ ازیں 7 گاڑیاں جل کر تباہ ہو گئیں اور ایمبولینس کی دو گاڑیوں کو شدید نقصان پہنچا۔ اس کارروائی میں حوثی ملیشیا نے راکٹوں اور ڈرون طیاروں کا استعمال کیا تھا۔