.

اسرائیل کی نئی حکومت میں ایک عرب وزیر بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل میں دائیں بازو کے رہ نما نفتالی بینیٹ کے زیر قیادت نئی حکومتی تشکیل میں ایک عرب سیاست دان عیساوی فریج (57 سالہ) بھی شامل ہیں۔ وہ علاقائی تعاون کے وزیر کے منصب پر کام کریں گے۔ فریج کا تعلق بائیں بازو کی جماعت "میرٹس" سے ہے۔ اس جماعت نے ماضی میں اسرائیل کے عرب شہریوں کو مساوی حقوق دینے کی سپورٹ کی تھی۔

اسرائیلی پارلیمنٹ نے کل اتوار کے روز نفتالی بینیٹ کی سربراہی میں نئی حکومت کی منظوری دی تھی۔ یہ حکومت 8 مختلف جماعتوں کا اتحاد ہے۔ علاوہ ازیں اسرائیل کی تاریخ میں پہلی مرتبہ حکومت میں ایک عرب جماعت 'القائمة الموحدة' بھی شامل ہے۔ جماعت کے سربراہ اخوانی رہ نما منصور عباس ہیں۔

اسرائیل میں تشکیل پانے والی 36 ویں حکومت کو اتوار کے روز پارلیمنٹ میں 60 ارکان کے ووٹ ملے جب کہ اس کے خلاف 59 دیے گئے۔

نفتالی بینیٹ کی نئی حکومت 27 وزراء پر مشتمل ہے جن میں 9 خواتین وزیر ہیں۔ یہ اسرائیلی حکومتوں کی تاریخ میں کسی بھی کابینہ کے اندر خواتین کی سب سے بڑی تعداد ہے۔