.

مصرمیں مردوں کو باکسنگ کی ٹریننگ دینے والی خاتون باکسر سے ملیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شہر بنی سویف کے ایک چھوٹے سے ٹریننگ ہال میں 36 سالہ صباح عبدالحلیم صقر نوجوان مردوں کو ہفتے میں دو بار باکسنگ کی تربیت دے رہی ہیں۔

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں شاید کسی خاتون کا مردوں کو باکسنگ کی ٹریننگ دینا زیادہ حیرت کی بات نہ ہو مگر قاہرہ سے 100 کلومیٹر جنوب میں بنی سویف کے زرعی علاقے میں خواتین کے کام کاج کا رحجان نہ ہونے کے برابر ہے۔

صباح عبد الحليم صقر
صباح عبد الحليم صقر

ایک غیر ملکی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے صباح عبدالحلیم نے کہا کہ میں نے اتفاق سے یہ باکسنگ ٹریننگ شروع کی۔ مجھے یہ پسند نہیں آئی۔ مجھے اس کے چہرے سے ڈر لگتا تھا۔ پھر مُجھے اس کی عادت پڑ گئی۔

اس نے دو سال قبل یہ کام شروع کیا۔ وہ اب تک دس سے زاید میڈل اور اعزاز حاصل کر چکی ہے۔ صباح ایک شادی شدہ اور ایک بچے کی ماں ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ اب تک 18 سے 30 سال کی عمر کے 20 مردوں کو باکسنگ سکھا چکی ہے۔

صباح عبد الحليم صقر
صباح عبد الحليم صقر

صباح نے کہا کہ لوگوں نے پہلے اس صورتحال کو قبول نہیں کیا۔ جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ بالائی مصر میں ورزشیں مردوں کے لیے ہیں۔ خاص طور پر باکسنگ میں خواتین کے لیے مشکلات ہیں۔

کسی لڑکی کےلیے باکسنگ کوچ بننا ایک مشکل خیال تھا لیکن وقت گزرنے کے ساتھ لوگوں نے صورتحال کو قبول کر لیا۔ مجھے معلوم ہوا کہ میں کسی بھی دوسرے نوجوان کوچ کی طرح سنجیدگی سے تربیت دے سکتی ہوں کیونکہ مجھے سخت ورزش سے بہت محبت ہے۔

صباح عبد الحليم صقر
صباح عبد الحليم صقر