.

ٹور ڈی فرانس : خاتون تماشائی کے سبب سائیکل ریس میں بدترین حادثہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس میں ایک سائیکل ریس کے دوران خاتون تماشائی کی غیر ذمے دارانہ حرکت کے سبب درجنوں سائیکل سوار زمین پر گر گئے۔ یہ واقعہ ہفتے کے روز "ٹور ڈی فرانس 2021ء" سائیکل ریس کے پہلے مرحلے کے آغاز پر پیش آیا۔

وڈیو کلپوں سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ایک خاتون تماشائی جس کے بارے میں خیال ہے کہ وہ جرمن شہری ہے ، وہ ٹریک کے کنارے ہاتھوں میں ایک پلے کارڈ اٹھائے مسکرا کر پوز دے رہی تھی۔ خاتون تماشائی کا چہرہ ٹیلی وژن کی موٹر بائیکوں کے کیمرے کی جانب تھا اور اسے اپنے پیچھے کی سمت سے آنے والے سائیکل سواروں کی کوئی خبر نہ تھی۔ اسی دوران جرمن سائیکلسٹ ٹونی مارٹن اس خاتون کے پلے کارڈ سے ٹکرا کر زمین پر گر گیا۔ مارٹن کا گرنا پیچھے آنے والوں کے الیے اچانک ناگہانی ثابت ہوا۔ اس کے نتیجے میں درجنوں سائیکل سوار ایک دوسرے سے ٹکرا کر پے در پے زمین پر گرتے چلے گئے۔ حادثے میں 21 کے قریب سائیکل سواروں کو مختلف نوعیت کی چوٹیں آئیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق فرانسیسی پولیس اس حادثے کا سبب بننے والی خاتون تماشائی کی تلاش میں ہے۔ وہ حادثے کے فوری بعد جائے وقوع سے فرار ہو گئی۔ خاتون کو سزا کا سامنا ہو گا جس کی مدت ایک سال جیل تک ہو سکتی ہے۔

یہ واقعہ ٹور ڈی فرانس سائیکل ریس کی تاریخ کے بدترین حادثات میں سے ایک ہے۔ اس حادثے کے سبب ریس کو تقریبا 5 منٹ کے لیے روکنا پڑا۔ اس دوران میں سائیکل سواروں کو اٹھانے میں مدد دی گئی تا کہ وہ ریس کا مرحلہ پورا کر سکیں۔

گرنے والے سائیکل سواروں میں چار مرتبہ کے برطانوی چیمپین کرس فروم بھی شامل تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ "سیکنڈ کے ایک حصے میں ہم میں سے 50 سے 60 لوگ سب زمین پر تھے"۔

استغاثہ نے اس واقعے کے حوالے سے فوجداری تحقیق شروع کر دی ہے۔ مذکورہ خاتون تماشائی پر سلامتی کے قواعد و ضوابط کی دانستہ خلاف ورزی کا الزام ہے۔

حادثے میں زخمی ہونے والے بعض سائیکل سواروں نے خاتون تماشائی کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔