.

سعوی وژن2030ء نے خواتین کواپنی صلاحیتیں منوانے کے مواقع مہیا کیے:شہزادی ریما

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں متعیّن سعودی سفیر شہزادی ریمابنت بندر نے کہا ہے کہ’’سعودی وژن 2030 نے مملکت میں خواتین کوترقی کے نئے مواقع مہیا کیے۔ سعودی خواتین کو چاہیے کہ وہ مختلف اقتصادی شعبوں میں اپنی مہارتوں کو نکھارنے کے لیے دستیاب مواقع اورپروگراموں سے فائدہ اٹھائیں۔‘‘

شہزادی ریما نے ان خیالات کا اظہار’سعودی عرب میں سرمایہ کار خواتین کے لیے ترغیبات‘ کے موضوع پر ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس کا اہتمام اطلانتک کونسل کےتحت ’’مشرق وسطیٰ کو بااختیار بنانا‘‘ پروگرام نے کیا تھا۔

سعودی عرب میں امریکا کے سفارتی مشن، مملکت میں امریکی ایوان تجارت کے ماتحت لیڈیز کمیٹی کی شراکت سے یہ پروگرام ترتیب دیا گیا تھا۔

شہزادی ریما نے سعودی عرب میں اقتصادی و سماجی اصلاحات کا ذکرکرتے ہوئے کہاکہ’’ان کی بدولت خواتین کو تجارتی مواقع سے استفادے میں مدد ملی۔ سعودی ولی عہد مقامی نوجوانوں اور خواتین کو بااختیار بنانے کے لیے اصلاحاتی عمل کی قیادت کررہے ہیں۔‘‘

انھوں نے کہا کہ ’’ڈیجیٹل اکانومی کے دور میں نئے مواقع اور شعبے جنم لے رہے ہیں۔ خواتین کا دائرہ کار روزبروز وسیع ہورہا ہے۔‘‘

انھوں نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ’’وہ مزید سعودی خواتین کو معاشرے اور معیشت میں کلیدی عہدوں پر فائز دیکھنا چاہتی ہیں۔‘‘

یہ اپنی نوعیت کا پہلا پروگرام ہے۔ اس سال اس سلسلے کی پانچ ورکشاپیں منعقد ہوں گی۔ ان کا مقصد امریکا اور سعودی عرب میں تجارتی پروگراموں کو ترقی کی نئی منزلوں سے متعارف کرانے والی شخصیات کے درمیان روابط کا فروغ ہے تاکہ دونوں ملکوں کے شعبہ تجارت سے وابستہ افراد مربوط باہمی تعلقات استوار کرسکیں۔