.

جبل علی پورٹ پرآتش گیرمواد سے لدے کنٹینر میں حادثاتی طور پرآگ لگی تھی:دبئی حکومت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دبئی کی حکومت نے واضح کیا ہے کہ جبل علی پورٹ پر ایک جہازمیں حادثاتی طور پرآگ لگی تھی اور اس پر لدے ایک کنٹینر میں آتش گیرمواد کے دھماکے کے بعد اچانک آگ بھڑک اٹھی تھی۔

حکومت دبئی کے میڈیا دفتر کی ڈائریکٹر جنرل منیٰ غانم المری نے العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ متحدہ عرب امارات اور دبئی دنیا کے محفوظ ترین شہروں اور ملکوں میں سے ہیں۔اللہ کا شہر ہے کہ ہر چیز محفوظ ہے۔یہ ایک قدرتی حادثہ تھا اور یہ ایک کنٹینر میں آتش گیر مواد کی وجہ سے رونما ہوا تھا۔اس کی کوئی اور وجہ نہیں تھی۔‘‘

متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی میں بدھ کی نصف شب ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی گئی تھی۔دبئی کے میڈیا دفتر نے ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ جبل علی پورٹ پر لنگرانداز ایک جہاز پر لدے کنٹینرمیں آگ لگ گئی تھی اور اس کے بعد زوردار دھماکا ہوا ہے۔

دبئی کے پولیس سربراہ عبداللہ المری نے بھی العربیہ سے گفتگو میں بتایا ہے کہ ’’جبل علی پورٹ پر جس جہاز کو آگ لگی تھی،اس پر تیس کنٹینر لدے ہوئے تھے،ان میں سے بعض پر آتش گیر مواد لدا ہوا تھا۔ابتدائی رپورٹ کے مطابق درجہ حرارت کی شدت کی وجہ سے ان میں سے ایک کنٹینر میں دھماکا ہوا تھا۔‘‘

المری نے مزید بتایا کہ ’’اس جہاز کے عملہ کے چودہ ارکان کو دھماکے سے قبل ہی بروقت نکال لیا گیا تھا۔اداروں کی بروقت امدادی کارروائی کی وجہ سے اس واقعہ میں کوئی بھی شخص زخمی نہیں ہوا ہے۔‘‘

دبئی کے علاقے میرینا کے بعض مکینوں نے بھی دھماکے کی زوردارآواز سننے کی اطلاع دی تھی اور کہا تھا کہ اس سے ان کے مکانوں کی کھڑکیوں اور دروازوں کے شیشے ٹوٹ گئے ہیں۔