.

سوڈان میں شورش زدہ علاقوں میں نئی فوجی کمک روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان کی خودمختاری کونسل نے کل پیر کے روز کہا ہے کہ سلامتی اور دفاع کونسل نے ایک ہنگامی اجلاس میں مقامی اور علاقائی امن و سلامتی سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔ اجلاس میں معاشرتی تشدد اور النہضہ ڈیم کے حوالے سے ہونے والی پیش رفت کا بھی جائزہ لیا گیا۔

کونسل نے ایک بیان میں مزید کہا کہ النہضہ ڈیم کےحوالےسے قائم کردہ کمیٹی کا ایک اجلاس روصیرص شہر میں منعقد کیا جائےگا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سلامتی اور دفاع کونسل کو "النہضہ ڈیم سے متعلق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس کے نتائج اور تمام فریقوں کے حقوق اور قانونی ضمانتوں کے تحفظ کے لیے سوڈان کی کوششوں کو مکمل کرنے کے عملی اختیارات اور اقدامات کے بارے میں بتایا گیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ کونسل نے شورش زدہ علاقوں بحر احمر اور جنوبی کردفان میں کمیونٹی کی سلامتی کو برقرار رکھنے کے لیے فوجی کمک بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ رہائشی محلوں میں داخلی سلامتی کے کاموں کو تیز کیا جائے گا جس سے متاثرہ علاقوں میں انسانی امداد کی کوششوں کو تیزکرنے میں مدد ملے گی۔

سوڈان کی بحر احمر ریاست میں دو روز قبل ایک اسپورٹس کلب میں نامعلوم افراد نے بم دھماکا کیا جس کے نتیجےمیں کم سے کم چار افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔

بحیرہ احمر کی ریاستی سیکیورٹی کمیٹی نے گذشتہ دو روز کے دوران سوڈان بندرگاہ میں ہونے والے واقعات کے حوالے سے ایک بیان جاری کیا۔

بیان میں کہا گیا ہے گذشتہ روز جنوبی سیکٹر کے کچھ محلوں نے لفہ ازرق کے علاقے میں مشترکہ افواج کو نشانہ بنانے کا نشانہ بنایا جس نے مشترکہ فورسز پر براہ راست گولیوں کا فائر کیا۔ اس کے نتیجے میں گولی لگنے سے کویک رسپانس یونٹ کا ایک اہلکار زخمی ہو گیا۔